الادب المفرد - حدیث 844

كِتَابُ بَابُ اسْمِ النَّبِيِّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَكُنْيَتِهِ حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ قَالَ: حَدَّثَنَا اللَّيْثُ قَالَ: حَدَّثَنِي ابْنُ عَجْلَانَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ قَالَ: نَهَى رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَنْ نَجْمَعَ بَيْنَ اسْمِهِ وَكُنْيَتِهِ، وَقَالَ: ((أَنَا أَبُو الْقَاسِمِ، وَاللَّهُ يُعْطِي، وَأَنَا أَقْسِمُ))

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 844

کتاب نبی صلی اللہ علیہ وسلم کا نام اور کنیت رکھنے کا حکم سیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنا نام اور کنیت ایک ساتھ رکھنے سے منع کیا اور فرمایا:میں ابوالقاسم ہوں۔ اللہ تعالیٰ دیتا ہے اور میں تقسیم کرتا ہوں۔
تخریج : حسن صحیح:أخرجه الترمذي، کتاب الادب:۲۱۴۱۔ وأحمد:۲؍ ۴۲۳۔ من حدیث محمد بن عجلان به وعلقه:۴۹۶۶۔