الادب المفرد - حدیث 588

كِتَابُ بَابُ الْبَغْيِ حَدَّثَنَا أَبُو نُعَيْمٍ قَالَ: حَدَّثَنَا فِطْرٌ، عَنْ أَبِي يَحْيَى قَالَ: سَمِعْتُ مُجَاهِدًا، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ قَالَ: لَوْ أَنَّ جَبَلًا بَغَى عَلَى جَبَلٍ لَدُكَّ الْبَاغِي

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 588

کتاب سرکشی کا بیان حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے، انہوں نے کہا:اگر ایک پہاڑ دوسرے پر سرکشی کرے تو سرکشی کرنے والے کا چورا ہو جائے۔
تشریح : مطلب یہ ہے کہ سرکشی بہت خطرناک گناہ ہے، حتی کہ اگر جمادات بھی اس کا ارتکاب کریں تو باغی ریزہ ریزہ ہو جائے یا اگر جس پر بغاوت کی جارہی ہے وہ ختم ہو جائے تو بغاوت کرنے والا بھی نہیں بچے گا اور ریزہ ریزہ ہو جائے گا۔
تخریج : صحیح:أخرجه وکیع في الزهد:۴۲۷۔ وابن وهب في الجامع:۲۷۴۔ وهناد في الزهد:۲؍ ۶۴۳۔ وأبو نعیم في الحلیة :۱؍ ۳۲۲۔ انظر الضعیفة تحت الحدیث:۱۹۴۸۔ مطلب یہ ہے کہ سرکشی بہت خطرناک گناہ ہے، حتی کہ اگر جمادات بھی اس کا ارتکاب کریں تو باغی ریزہ ریزہ ہو جائے یا اگر جس پر بغاوت کی جارہی ہے وہ ختم ہو جائے تو بغاوت کرنے والا بھی نہیں بچے گا اور ریزہ ریزہ ہو جائے گا۔