الادب المفرد - حدیث 546

كِتَابُ بَابُ إِذَا أَحَبَّ رَجُلًا فَلَا يُمَارِهِ وَلَا يَسْأَلُ عَنْهُ حَدَّثَنَا الْمُقْرِئُ قَالَ: حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ يَزِيدَ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَمْرٍو، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ: " مَنْ أَحَبَّ أَخًا لِلَّهِ، فِي اللَّهِ، قَالَ: إِنِّي أُحِبُّكَ لِلَّهِ، فَدَخَلَا جَمِيعًا الْجَنَّةَ، كَانَ الَّذِي أَحَبَّ فِي اللَّهِ أَرْفَعَ دَرَجَةً لِحُبِّهِ، عَلَى الَّذِي أَحَبَّهُ لَهُ "

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 546

کتاب جب آدمی کسی سے محبت کرے تو اس سے جھگڑا نہ کرے اور نہ اس کے بارے میں کسی سے پوچھے حضرت عبداللہ بن عمرو رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’جس نے اپنے کسی دینی بھائی سے اللہ کی رضا کے لیے محبت کی اور کہا کہ میں تم سے اللہ تعالیٰ کے لیے محبت کرتا ہوں تو وہ دونوں اکٹھے جنت میں داخل ہوں گے۔ وہ شخص جس نے صرف اللہ کے لیے محبت کی اس کا درجہ بلند ہوگا اس پر جس نے اس محبت کی وجہ سے اس سے محبت کی۔‘‘
تشریح : اس روایت کی سند ضعیف ہے۔ اس میں عبدالرحمن بن زیاد بن انعم افریقی راوی ضعیف ہے۔
تخریج : ضعیف:أخرجه ابن وهب في الجامع:۲۰۵۔ وعبد بن حمید:۳۳۲۔ والطبراني في الکبیر:۱۳؍ ۲۸۔ اس روایت کی سند ضعیف ہے۔ اس میں عبدالرحمن بن زیاد بن انعم افریقی راوی ضعیف ہے۔