الادب المفرد - حدیث 484

كِتَابُ بَابُ الظُّلْمُ ظُلُمَاتٌ حَدَّثَنَا حَاتِمٌ قَالَ: حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ جَعْفَرٍ قَالَ: حَدَّثَنَا الْمُنْكَدِرُ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ الْمُنْكَدِرِ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَابِرٍ قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: ((يَكُونُ فِي آخِرِ أُمَّتِي مَسْخٌ، وَقَذْفٌ، وَخَسْفٌ، وَيُبْدَأُ بِأَهْلِ الْمَظَالِمِ))

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 484

کتاب ظلم آخرت میں تاریکیاں ہوں گی حضرت جابر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:’’میری امت کے آخری زمانہ میں صورتیں بگڑنے، پتھر برسنے اور دھنسائے جانے کے واقعات رونما ہوں گے اور اس کا آغاز ظالموں سے ہوگا۔‘‘
تشریح : اس روایت کی سند ضعیف ہے، تاہم پہلا حصہ ’’صورتیں بگڑنا....دھنسایا جانا‘‘ دیگر صحیح روایات سے ثابت ہے۔
تخریج : ضعیف:الصحیحة، تحت الحدیث:۱۷۸۷۔ اس روایت کی سند ضعیف ہے، تاہم پہلا حصہ ’’صورتیں بگڑنا....دھنسایا جانا‘‘ دیگر صحیح روایات سے ثابت ہے۔