الادب المفرد - حدیث 482

كِتَابُ بَابُ سُؤَالِ الْعَبْدِ الرِّزْقَ مِنَ اللَّهِ عَزَّ وَجَلَّ لِقَوْلِهِ: ارْزُقْنَا وَأَنْتَ خَيْرُ الرَّازِقِينَ حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ بْنُ أَبِي أُوَيْسٍ قَالَ: حَدَّثَنِي ابْنُ أَبِي الزِّنَادِ، عَنْ مُوسَى بْنِ عُقْبَةَ، عَنْ أَبِي الزُّبَيْرِ، عَنْ جَابِرٍ، أَنَّهُ سَمِعَ النَّبِيَّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَلَى الْمِنْبَرِ نَظَرَ نَحْوَ الْيَمَنِ فَقَالَ: ((اللَّهُمَّ أَقْبِلْ بِقُلُوبِهِمْ)) ، وَنَظَرَ نَحْوَ الْعِرَاقِ فَقَالَ مِثْلَ ذَلِكَ، وَنَظَرَ نَحْوَ كُلِّ أُفُقٍ فَقَالَ مِثْلَ ذَلِكَ، وَقَالَ: ((اللَّهُمَّ ارْزُقْنَا مِنْ تُرَاثِ الْأَرْضِ، وَبَارِكْ لَنَا فِي مُدِّنَا وَصَاعِنَا))

ترجمہ الادب المفرد - حدیث 482

کتاب اللہ تعالیٰ کے فرمان کے مطابق بندے کا اللہ سے رزق طلب کرنا کہ ہمیں رزق عطا فرما تو رزق عطا کرنے والوں میں سب سے بہتر ہے حضرت جابر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے برسر منبر سنا:آپ نے یمن کی طرف دیکھ کر فرمایا:’’اے اللہ ان کے دلوں کو ہماری طرف متوجہ فرما۔‘‘ اور عراق کی طرف دیکھ کر اسی طرح فرمایا بلکہ ہر طرف دیکھ کر اسی طرح دعا کی اور فرمایا:’’اے اللہ ہم کو زمین کی پیداوار سے رزق عطا فرما اور مد اور صاع (پیمانے)میں برکت عطا فرما۔
تشریح : اس روایت کی سند ضعیف ہے۔ ابوالزبیر مکی مدلس ہے، تاہم مد اور صاع کی برکت کی دعا دیگر صحیح احادیث سے ثابت ہے۔
تخریج : ضعیف:أخرجه أحمد:۱۴۶۹۰۔ المشکاۃ التحقیق الثانی:۶۲۶۳۔ انظر الإرواء:۴؍ ۱۷۶۔ اس روایت کی سند ضعیف ہے۔ ابوالزبیر مکی مدلس ہے، تاہم مد اور صاع کی برکت کی دعا دیگر صحیح احادیث سے ثابت ہے۔