Book - حدیث 901

کِتَابُ تَفْرِيعِ اسْتِفْتَاحِ الصَّلَاةِ بَابُ صِفَةِ السُّجُودِ حسن حَدَّثَنَا عَبْدُ الْمَلِكِ بْنُ شُعَيْبِ بْنِ اللَّيْثِ حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ حَدَّثَنَا اللَّيْثُ عَنْ دَرَّاجٍ عَنْ ابْنِ حُجَيْرَةَ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ إِذَا سَجَدَ أَحَدُكُمْ فَلَا يَفْتَرِشْ يَدَيْهِ افْتِرَاشَ الْكَلْبِ وَلْيَضُمَّ فَخْذَيْهِ

ترجمہ Book - حدیث 901

کتاب: نماز شروع کرنے کے احکام ومسائل باب: سجدہ کیسے کیا جائے ؟ سیدنا ابوہریرہ ؓ نبی کریم ﷺ سے روایت کرتے ہیں کہ آپ ﷺ نے فرمایا ” جب تم میں سے کوئی سجدہ کرے تو اپنے ہاتھوں کو ( زمین پر ) کتے کی طرح نہ پھیلائے اور اپنی رانوں کو ملا کر رکھے ۔ “ حضرت ابو حمید ساعدی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی حدیث میں ہے کہ جب آپ سجدہ کرتے ہوئے تو اپنی رانوں میں فاصلہ کرتے اور اپنے پیٹ کو بھی اٹھائے ہوتے اسے رانوں کاسہارا نہ دیتے ۔(سنن ابی دائود۔حدیث 735)2۔سجدہ کرنے کا یہ طریقہ مردوں اور عورتوں دونوں کے لئے ہے۔ کیونکہ عورتوں کے لئے نبی کریم ﷺ نے سجدے کاکوئی الگ طریقہ بیان نہیں فرمایا۔اس سلسلے میں جو روایات بیان کی جاتی ہیں۔ان میں کوئی بھی صحیح نہیں ہے۔ تفصیل کے لئے دیکھئے حافظ یوسف صلاح الدین کی کتاب کیا عورتوں کا طریقہ نماز مردوں سے مختلف ہے۔ (مطبوعہ دارالسلام)