Book - حدیث 560

كِتَابُ الصَّلَاةِ بَابُ مَا جَاءَ فِي فَضْلِ الْمَشْيِ إِلَى الصَّلَاةِ صحيح خ الشطر الأول منه حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ عِيسَى، حَدَّثَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ، عَنْ هِلَالِ بْنِ مَيْمُونٍ، عَنْ عَطَاءِ بْنِ يَزِيدَ، عَنْ أَبِي سَعِيدٍ الْخُدْرِيِّ، قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: >الصَّلَاةُ فِي جَمَاعَةٍ تَعْدِلُ خَمْسًا وَعِشْرِينَ صَلَاةً، فَإِذَا صَلَّاهَا فِي فَلَاةٍ فَأَتَمَّ رُكُوعَهَا وَسُجُودَهَا, بَلَغَتْ خَمْسِينَ صَلَاةً< قَالَ أَبمو دَاومد قَالَ عَبْدُ الْوَاحِدِ بْنُ زِيَادٍ فِي هَذَا الْحَدِيثِ >صَلَاةُ الرَّجُلِ فِي الْفَلَاةِ تُضَاعَفُ عَلَى صَلَاتِهِ فِي الْجَمَاعَةِ...<، وَسَاقَ الْحَدِيثَ.

ترجمہ Book - حدیث 560

کتاب: نماز کے احکام ومسائل باب: نماز کے لیے پیدل چل کر جانے کی فضیلت سیدنا ابو سعید خدری ؓ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ” جماعت کے ساتھ نماز پچیس نمازوں کے برابر ہوتی ہے ۔ اور جب کوئی شخص بیابان میں نماز پڑھتا ہے اور اس کے رکوع اور سجود کو کامل کرتا ہے تو اس کا ثواب پچاس نمازوں تک پہنچ جاتا ہے ۔ “ امام ابوداؤد ؓ نے کہا کہ عبدالواحد بن زیاد نے اس حدیث میں کہا ” بیابان میں نماز ( شہر اور آبادی کے اندر ) جماعت کی نماز سے دوگنا ہوتی ہے ۔ “ اور ( عبدالواحد نے مکمل ) حدیث بیان کی ۔ یعنی بیابان میں نماز کی فضیلت دوچند ہوجاتی ہے۔یہ بھی معلوم ہواکہ بیابان میں انسان اکیلا ہوتے ہوئے بھی ازان واقامت کہہ کر نماز پڑھے تو وہ جماعت ہے۔