Book - حدیث 5158

كِتَابُ النَّومِ بَابٌ فِي حَقِّ الْمَمْلُوكِ صحیح حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ حَدَّثَنَا عِيسَى بْنُ يُونُسَ حَدَّثَنَا الْأَعْمَشُ عَنْ الْمَعْرُورِ بْنِ سُوَيْدٍ قَالَ دَخَلْنَا عَلَى أَبِي ذَرٍّ بِالرَّبَذَةِ فَإِذَا عَلَيْهِ بُرْدٌ وَعَلَى غُلَامِهِ مِثْلُهُ فَقُلْنَا يَا أَبَا ذَرٍّ لَوْ أَخَذْتَ بُرْدَ غُلَامِكَ إِلَى بُرْدِكَ فَكَانَتْ حُلَّةً وَكَسَوْتَهُ ثَوْبًا غَيْرَهُ قَالَ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ إِخْوَانُكُمْ جَعَلَهُمْ اللَّهُ تَحْتَ أَيْدِيكُمْ فَمَنْ كَانَ أَخُوهُ تَحْتَ يَدَيْهِ فَلْيُطْعِمْهُ مِمَّا يَأْكُلُ وَلْيَكْسُهُ مِمَّا يَلْبَسُ وَلَا يُكَلِّفْهُ مَا يَغْلِبُهُ فَإِنْ كَلَّفَهُ مَا يَغْلِبُهُ فَلْيُعِنْهُ قَالَ أَبُو دَاوُد رَوَاهُ ابْنُ نُمَيْرٍ عَنْ الْأَعْمَشِ نَحْوَهُ

ترجمہ Book - حدیث 5158

كتاب: سونے سے متعلق احکام ومسائل باب: غلاموں کا خاص خیال رکھنے کا بیان جناب معرور بن سوید ؓ بیان کرتے ہیں کہ ہم ربذہ مقام میں سیدنا ابوذر ؓ سے ملے ۔ ہم نے دیکھا کہ ان پر ایک اونی چادر تھی اور ان کے غلام پر بھی اسی طرح کی ایک چادر تھی ۔ تو ہم نے کہا : اے ابوذر ! اگر آپ اپنے غلام والی چادر اپنی چادر کے ساتھ ملا لیتے تو ایک جوڑا بن جاتا اور اسے آپ کوئی اور کپڑا لے دیتے ۔ تو انہوں نے فرمایا ، میں نے رسول اللہ ﷺ سے سنا ہے ، آپ ﷺ فرماتے تھے ” یہ تمہارے بھائی ہیں جنہیں اللہ نے تمہارے ماتحت کر دیا ہے ۔ چنانچہ جس کا بھائی اس کے ماتحت ہو تو اس کو چاہیئے کہ اسے وہی کھلائے جو وہ خود کھاتا ہے اور اسے وہی پہنائے جو خود پہنتا ہے ۔ اور اسے اس کی ہمت سے زیادہ کام نہ دے ، اگر اسے مکلف کرے ، تو اس کی مدد بھی کرے ۔ “ امام ابوداؤد ؓ فرماتے ہیں کہ اس روایت کو ابن نمیر نے اعمش سے مذکورہ بالا کی مانند روایت کیا ہے ۔ 1۔اسلام ہی وہ اولین دین ہے۔جس نے غلاموں اور مملوکوں کو اس قدر عظیم مساوات کےحقوق دیے ہیں۔2۔غلاموں نوکروں اور خادموں کو اچھا لباس اور اچھا کھانا دینے سے مالک کی عزت وقدر میں کوئی کمی نہیں آتی۔بلکہ اضافہ ہوتاہے۔3۔لازمی ہے کہ انسان پر مشقت کام میں غلام اور نوکر کی مدد کرے۔