Book - حدیث 493

كِتَابُ الصَّلَاةِ بَابُ النَّهيِ عَنِ الصَّلَاةِ فِي مَبَارِكِ الإِبِلِ صحیح حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ، حَدَّثَنَا أَبُو مُعَاوِيَةَ، حَدَّثَنَا الْأَعْمَشُ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ الرَّازِيِّ، عَنْ عَبْدِ الرَّحْمَنِ ابْنِ أَبِي لَيْلَى عَنِ الْبَرَاءِ بْنِ عَازِبٍ، قَالَ: سُئِلَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ عَنِ الصَّلَاةِ فِي مَبَارِكِ الْإِبِلِ، فَقَال:َ >لَا تُصَلُّوا فِي مَبَارِكِ الْإِبِلِ, فَإِنَّهَا مِنَ الشَّيَاطِينِ<. وَسُئِلَ عَنِ الصَّلَاةِ فِي مَرَابِضِ الْغَنَمِ؟ فَقَالَ: >صَلُّوا فِيهَا, فَإِنَّهَا بَرَكَةٌ<.

ترجمہ Book - حدیث 493

کتاب: نماز کے احکام ومسائل باب: اونٹوں کے باڑوں میں نماز پڑھنے کی ممانعت سیدنا براء بن عازب ؓ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ سے اونٹوں کے باڑوں میں نماز کے متعلق پوچھا گیا تو آپ ﷺ نے فرمایا ” ان میں نماز نہ پڑھا کرو ، بلاشبہ یہ شیاطین میں سے ہیں ۔ “ اور بکریوں کے باڑوں کے متعلق پوچھا گیا تو فرمایا ” ان میں نماز پڑھ لیا کرو ، بلاشبہ یہ بابرکت ہوتی ہیں ۔ “ یہ حکم اونٹوں کے باڑے سے متعلق ہے۔جہاں انہیں رات کو باندھا جاتا ہے۔اس کے علاوہ جگہ میں جہاں ایک دو اونٹ ہوں۔ وہاں جائز ہے۔ بلکہ اسے ستر ہ بھی بنایا جاسکتا ہے۔