Book - حدیث 4524

كِتَابُ الدِّيَاتِ بَابٌ فِي تَرْكِ الْقَوَدِ بِالْقَسَامَةِ صحيح لغيره حَدَّثَنَا الْحَسَنُ بْنُ عَلِيِّ بْنِ رَاشِدٍ أَخْبَرَنَا هُشَيْمٌ عَنْ أَبِي حَيَّانَ التَّيْمِيِّ حَدَّثَنَا عَبَايَةُ بْنُ رِفَاعَةَ عَنْ رَافِعِ بْنِ خَدِيجٍ قَالَ أَصْبَحَ رَجُلٌ مِنْ الْأَنْصَارِ مَقْتُولًا بِخَيْبَرَ فَانْطَلَقَ أَوْلِيَاؤُهُ إِلَى النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَذَكَرُوا ذَلِكَ لَهُ فَقَالَ لَكُمْ شَاهِدَانِ يَشْهَدَانِ عَلَى قَتْلِ صَاحِبِكُمْ قَالُوا يَا رَسُولَ اللَّهِ لَمْ يَكُنْ ثَمَّ أَحَدٌ مِنْ الْمُسْلِمِينَ وَإِنَّمَا هُمْ يَهُودُ وَقَدْ يَجْتَرِئُونَ عَلَى أَعْظَمَ مِنْ هَذَا قَالَ فَاخْتَارُوا مِنْهُمْ خَمْسِينَ فَاسْتَحْلَفُوهُمْ فَأَبَوْا فَوَدَاهُ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مِنْ عِنْدِهِ

ترجمہ Book - حدیث 4524

کتاب: دیتوں کا بیان باب: قسامت کی وجہ سے قصاص نہ لینے کا بیان سیدنا رافع بن خدیج ؓ نے بیان کیا کہ انصاریوں کا ایک آدمی خیبر میں قتل ہو گیا ۔ تو اس کے وارث نبی کریم ﷺ کے ہاں گئے اور اس مقتول کا ذکر کیا ۔ آپ ﷺ نے فرمایا ” کیا تمہارے پاس دو گواہ ہیں جو تمہارے اس ساتھی کے قتل کے متعلق گواہی دیں ؟ “ انہوں نے کہا : اے اللہ کے رسول ! وہاں مسلمانوں میں سے کوئی بھی نہ تھا ‘ اور وہ لوگ یہودی ہیں ‘ وہ اس سے بھی بڑی باتوں کی جرات کر سکتے ہیں ۔ آپ ﷺ نے فرمایا ” تو ان میں سے پچاس آدمیوں کو منتخب کر لو اور ان سے قسمیں لے لو ۔ “ مگر انہوں نے انکار کر دیا ۔ تب رسول اللہ ﷺ نے اپنی طرف سے اس کی دیت ادا فرمائی ۔ صحیح اورراجح یہ ہے کہ پہلےمدعی لوگوں میں سے بچاس آدمی قسمیں کھا کر اپنا دعوی ثابت کریں گے تب فریق مخالف سے قسمیں وغیرہ لی جائیں گی ۔