Book - حدیث 4511

كِتَابُ الدِّيَاتِ بَابٌ فِيمَنْ سَقَى رَجُلًا سَمًّا أَوْ أَطْعَمَهُ فَمَاتَ أَيُقَادُ مِنْهُ حسن صحيح حَدَّثَنَا وَهْبُ بْنُ بَقِيَّةَ، حَدَّثَنَا خَالِدٌ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ عَمْرٍو، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ, أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ أَهْدَتْ لَهُ يَهُودِيَّةٌ بِخَيْبَرَ شَاةً مَصْلِيَّةً...- نَحْوَ حَدِيثِ جَابِرٍ، قَالَ: فَمَاتَ بِشْرُ ابْنُ الْبَرَاءِ بْنِ مَعْرُورٍ الْأَنْصَارِيُّ، فَأَرْسَلَ إِلَى الْيَهُودِيَّةِ, مَا حَمَلَكِ عَلَى الَّذِي صَنَعْتِ؟... فَذَكَرَ نَحْوَ حَدِيثِ جَابِرٍ، فَأَمَرَ بِهَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَقُتِلَتْ، وَلَمْ يَذْكُرْ أَمْرَ الْحِجَامَةِ.

ترجمہ Book - حدیث 4511

کتاب: دیتوں کا بیان باب: اگر کوئی شخص کسی کو زہر پلا یا کھلا دے اور وہ مر جائے تو کیا اس سے قصاص لیا جائے گا؟ سیدنا ابوسلمہ ؓ سے روایت ہے کہ خیبر میں ایک یہودی عورت نے رسول اللہ ﷺ کو ایک بھنی ہوئی بکری ہدیہ کی. اور سیدنا جابر ؓ کی روایت کی مانند روایت کیا ، کہا کہ پھر سیدنا بشر بن براء بن معرور انصاری ( اس کی وجہ سے ) فوت ہو گئے ۔ تو آپ ﷺ نے اس یہودن کو بلوایا ( اور اس سے پوچھا ) تجھے اس کام پر کس چیز نے آمادہ کیا تھا ؟ “ تو حدیث جابر کی مانند ذکر کیا ، تب رسول اللہ ﷺ نے اس کے متعلق حکم دیا تو اسے قتل کر دیا گیا ۔ اور پچھنے لگوانے کا معاملہ اس میں ذکر نہیں کیا ۔ 1 : اگر کوئی شخص کسی کو زہر کھلا کر مارڈالے تو اس قصاص لیا جائےگا 2 :اہل کتاب کا کھانا مسلمانوں کو حلال ہے اور اسی طرح ان سے ہدیہ لیا جاسکتا ہے 3 : یہ رسول ؐ کا معجزہ تھا کہ گوشت کے ایک ٹکڑے نے اپنے زہر آلود ہونے کی خبر دے دی ۔