Book - حدیث 4403

كِتَابُ الْحُدُودِ بَابٌ فِي الْمَجْنُونِ يَسْرِقُ أَوْ يُصِيبُ حَدًّا صحیح حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا وُهَيْبٌ، عَنْ خَالِدٍ، عَنْ أَبِي الضُّحَى، عَنْ عَلِيٍّ عَلَيْهِ السَّلَام، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، قَالَ: >رُفِعَ الْقَلَمُ عَنْ ثَلَاثَةٍ: عَنِ النَّائِمِ حَتَّى يَسسْتَيْقِظَ، وَعَنِ الصَّبِيِّ حَتَّى يَحْتَلِمَ، وَعَنِ الْمَجْنُونِ حَتَّى يَعْقِلَ<. قَالَ أَبُو دَاوُد: رَوَاهُ ابْنُ جُرَيْجٍ عَنِ الْقَاسِمِ بْنِ يَزِيدَ، عَنْ عَلِيٍّ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ زَادَ فِيهِ >وَالْخَرِفِ<.

ترجمہ Book - حدیث 4403

کتاب: حدود اور تعزیرات کا بیان باب: اگر کوئی مجنون ، اور پاگل شخص چوری کرے یا قابل حد جرم کا ارتکاب کرے سیدنا علی ؓ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا ” تین طرح کے آدمیوں سے قلم اٹھا لیا گیا ہے ‘ سوئے ہوئے سے حتیٰ کہ جاگ جائے ‘ بچے سے حتیٰ کہ بالغ ہو جائے اور مجنون سے حتیٰ کہ عقلمند ہو جائے ۔ “ امام ابوداؤد ؓ کہتے ہیں : اس روایت کو ابن جریج نے بواسطہ قاسم بن بزید ، سیدنا علی ؓ سے اور انہوں نے نبی کریم ﷺ سے بیان کیا ہے اور اس میں لفظ «الخرف» کا اضافہ کیا ۔ یعنی وہ آدمی جو بہت زیادہ عمر کی وجہ سے عقل و شعور کی کیفیت پر قائم نہ رہتا ہو ۔ بڑی عمر کا سٹھایاہوا آدمی جو اپنے عقل وشعورمیں نہ ہو، اس کابھی یہی حکم ہے۔واللہ اعلم