Book - حدیث 4308

كِتَابُ الْمَلَاحِمِ بَابٌ فِي ذِكْرِ الْبَصْرَةِ ضعیف حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى، حَدَّثَنِي إِبْرَاهِيمُ بْنُ صَالِحِ بْنِ دِرْهَمٍ، قَالَ: سَمِعْتُ أَبِي يَقُولُ انْطَلَقْنَا حَاجِّينَ, فَإِذَا رَجُلٌ، فَقَالَ لَنَا: إِلَى جَنْبِكُمْ قَرْيَةٌ يُقَالُ لَهَا: الْأُبُلَّةُ؟ قُلْنَا: نَعَمْ، قَالَ: مَنْ يَضْمَنُ لِي مِنْكُمْ أَنْ يُصَلِّيَ لِي فِي مَسْجِدِ الْعَشَّارِ رَكْعَتَيْنِ, أَوْ أَرْبَعًا؟ وَيَقُولَ: هَذِهِ لِأَبِي هُرَيْرَةَ، سَمِعْتُ خَلِيلِي رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ: >إِنَّ اللَّهَ يَبْعَثُ مِنْ مَسْجِدِ الْعَشَّارِ يَوْمَ الْقِيَامَةِ شُهَدَاءَ، لَا يَقُومُ مَعَ شُهَدَاءِ بَدْرٍ غَيْرُهُمْ<.

ترجمہ Book - حدیث 4308

کتاب: اہم معرکوں کا بیان جو امت میں ہونے والے ہیں باب: بصرے کا بیان ابراہیم بن صالح بن درہم کہتے ہیں کہ میں نے اپنے والد سے سنا ، وہ کہتے تھے کہ ہم لوگ حج کے لیے روانہ ہوئے تو اتفاق سے ہم سے ایک آدمی نے پوچھا : تمہارے قریب پہلو میں ابلہ نامی کوئی بستی ہے ؟ ہم نے کہا : ہاں ‘ تو اس نے کہا : تم میں سے کون میرا ضامن بنتا ہے کہ وہ میرے لیے مسجد عشار میں دو یا چار رکعتیں پڑھے اور کہے کہ یہ سیدنا ابوہریرہ ؓ کے لیے ہیں ؟ میں نے اپنے خلیل ابوالقاسم ﷺ کو فرماتے سنا ہے ” اللہ عزوجل قیامت کے دن مسجد عشار سے شہداء کو اٹھائے گے ۔ شہدائے بدر کے ساتھ ان لوگوں کے علاوہ اور کوئی نہیں اٹھے گا ۔ “ امام ابوداؤد ؓ فرماتے ہیں کہ یہ مسجد دریا کے کنارے پر ہے ۔