Book - حدیث 4254

كِتَابُ الْفِتَنِ وَالْمَلَاحِمِ بَابُ ذِكْرِ الْفِتَنِ وَدَلَائِلِهَا صحیح حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سُلَيْمَانَ الْأَنْبَارِيُّ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ، عَنْ سُفْيَانَ، عَنْ مَنْصُورٍ، عَنْ رِبْعِيِّ بْنِ حِرَاشٍ عَنِ الْبَرَاءِ ابْنِ نَاجِيَةَ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ مَسْعُودٍ، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ: >تَدُورُ رَحَى الْإِسْلَامِ لِخَمْسٍ وَثَلَاثِينَ، أَوْ سِتٍّ وَثَلَاثِينَ، أَوْ سَبْعٍ وَثَلَاثِينَ، فَإِنْ يَهْلَكُوا فَسَبِيلُ مَنْ هَلَكَ، وَإِنْ يَقُمْ لَهُمْ دِينُهُمْ يَقُمْ لَهُمْ سَبْعِينَ عَامًا. قَالَ: قُلْتُ: أَمِمَّا بَقِيَ؟ أَوْ مِمَّا مَضَى؟ قَالَ: مِمَّا مَضَى. قَالَ أَبُو دَاوُد: مَنْ قَالَ خِرَاشٍ فَقَدْ أَخْطَأَ.

ترجمہ Book - حدیث 4254

کتاب: فتنوں اور جنگوں کا بیان باب: فتنوں کا بیان اور ان کے دلائل سیدنا عبداللہ بن مسعود ؓ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا ” اسلام کی چکی پینتیس ‘ چھتیس یا سینتیس تک چلے گی ۔ پھر اگر ہلاک ہوئے تو ہلاک ہونے والوں کی یہی راہ ہو گی اور اگر ان کا دین قائم رہا تو ستر سال تک قائم رہے گا ۔ “ سیدنا ابن مسعود ؓ کہتے ہیں میں نے عرض کیا : کیا یہ ستر سال مزید ہوں گے یا سابقہ مدت بھی اس میں شامل ہے ؟ آپ ﷺ نے فرمایا ” گزشتہ مدت کے ساتھ ۔ “ امام بوداؤد ؓ کہتے ہیں ( ربعی بن حراش ” حا “ بغیر نقطے کے ہے ) جس نے خراش ” خا “ نقطے کے ساتھ کہا اس نے غلطی کی ہے ۔ ) اسلام کی چکی چلنے سے مراد اسلام کے نظام کا منہج نبوت پر محکم رہنا ہے۔ 2) پینتیس سال کی مدت بقول بعض شارحین آپ ؑ کے کے فرمان سے سیدنا عثمان رضی اللہ عنہ کی شہادت تک مکمل ہو تی ہے۔ اس کے ایک سال بعد واقع جمل اور اس کے بعد سینتیس سال میں جنگِ صفین ہو ئی تھی۔ بعد ازاں خلافت بنو امیہ میں رہی اور تقریباََ ستر سال بعد بنوعباس کو منتقل ہو گئی ( اس حدیث کی تفصیل کے لیئے ملاحظہ ہو فتح الباری جلد 13 کتاب الا حکام حدیث 7223،7222 )