Book - حدیث 3309

كِتَابُ الْأَيْمَانِ وَالنُّذُورِ بَابٌ فِي قَضَاءِ النَّذْرِ عَنْ الْمَيِّتِ صحیح حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ يُونُسَ، حَدَّثَنَا زُهَيْرٌ، حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ عَطَاءٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ ابْنِ بُرَيْدَةَ، عَنْ أَبِيهِ بُرَيْدَةَ أَنَّ امْرَأَةً أَتَتْ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَقَالَتْ: كُنْتُ تَصَدَّقْتُ عَلَى أُمِّي بِوَلِيدَةٍ، وَإِنَّهَا مَاتَتْ وَتَرَكَتْ تِلْكَ الْوَلِيدَةَ؟ قَالَ: >قَدْ وَجَبَ أَجْرُكِ، وَرَجَعَتْ إِلَيْكِ فِي الْمِيرَاثِ<. قَالَتْ: وَإِنَّهَا مَاتَتْ، وَعَلَيْهَا صَوْمُ شَهْرٍ؟. فَذَكَرَ نَحْوَ. حَدِيثِ عَمْرٍو.

ترجمہ Book - حدیث 3309

کتاب: قسم کھانے اور نذر کے احکام و مسائل باب: میت کی طرف سے نذر پوری کرنا سیدنا بریدہ ؓ سے روایت ہے کہ ایک عورت نبی کریم ﷺ کی خدمت میں آئی اور کہا : میں نے اپنی والدہ کو ایک لونڈی صدقہ ( عطیہ ) کی تھی اور اب وہ ( والدہ ) فوت ہو گئی ہے اور لونڈی ترکے میں چھوڑ گئی ہے ۔ آپ ﷺ نے فرمایا ” تیرا ثواب ثابت ہوا اور وہ لونڈی وراثت میں تجھے دوبارہ مل گئی ۔ “ اس نے بتایا کہ والدہ کے ذمے ایک مہینے کے روزے بھی ہیں ۔ آگے مذکورہ بالا حدیث عمرو بن عوف کی مانند بیان کی ۔