Book - حدیث 3223

كِتَابُ الْجَنَائِزِ بَابُ الْمَيِّتِ يُصَلَّى عَلَى قَبْرِهِ بَعْدَ حِينٍ صحیح حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ بْنُ سَعِيدٍ، حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، عَنْ يَزِيدَ بْنِ أَبِي حَبِيبٍ، عَنْ أَبِي الْخَيْرِ، عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ خَرَجَ: >يَوْمًا فَصَلَّى عَلَى أَهْلِ أُحُدٍ صَلَاتَهُ عَلَى الْمَيِّتِ ثُمَّ انْصَرَفَ<.

ترجمہ Book - حدیث 3223

کتاب: جنازے کے احکام و مسائل باب: ایک مدت کے بعد قبر پر جنازہ پڑھنا سیدنا عقبہ بن عامر ؓ کا بیان ہے کہ رسول اللہ ﷺ ایک دن تشریف لے گئے اور اہل احد پر نماز پڑھی جیسے کہ میت پر پڑھتے ہیں ‘ پھر واپس تشریف لے آئے ۔ کچھ لوگوں نے اس شہید کی نماز جنازہ کی مشروعیت پر استدلال کیا ہے۔جبکہ دوسرے اہل علم کہتے ہیں۔کہ یہاں نماز جنازہ پڑھنی مراد نہیں۔بلکہ جنازے جیسی دعا کرنی مراد ہے۔(عون المعبود) اس لئے مذکورہ استدلال کےلئے یہ واضح نص نہیں ہے۔