Book - حدیث 2217

كِتَابُ الطَّلَاقِ بَابٌ فِي الظِّهَارِ حسن حَدَّثَنَاابْنُ السَّرْحِ، حَدَّثَنَا ابْنُ وَهْبٍ، أَخْبَرَنِي ابْنُ لَهِيعَةَ وَعَمْرُو بْنُ الْحَارِثِ، عَنْ بُكَيْرِ بْنِ الْأَشَجِّ، عَنْ سُلَيْمَانَ بْنِ يَسَارٍ... بِهَذَا الْخَبَرِ، قَالَ: فَأُتِيَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِتَمْرٍ، فَأَعْطَاهُ إِيَّاهُ، وَهُوَ قَرِيبٌ مِنْ خَمْسَةِ عَشَرَ صَاعًا، قَالَ: >تَصَدَّقْ بِهَذَا<، قَالَ: يَا رَسُولَ اللَّهِ! عَلَى أَفْقَرَ مِنِّي، وَمِنْ أَهْلِي؟! فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: >كُلْهُ أَنْتَ وَأَهْلُكَ.

ترجمہ Book - حدیث 2217

کتاب: طلاق کے احکام و مسائل باب: ظہار کے احکام و مسائل سلیمان بن یسار نے یہ خبر بیان کی اور کہا کہ رسول اللہ ﷺ کے پاس کھجور لائی گئی ، آپ نے یہ اسے دے دی جو پندرہ صاع کے قریب تھی اور فرمایا ” اسے صدقہ کر دو ۔ “ تو اس نے کہا : اے اللہ کے رسول ! کیا اپنے اور اپنے گھر والوں سے زیادہ فقیر لوگوں پر صدقہ کروں ؟ آپ ﷺ نے فرمایا ” تم کھا لو اور تمہارے گھر والے ۔ “ ان کا یہ مطلب تھا کہ غربت کے لحاظ سے ہم سے زیادہ اس صدقے کا مستحق اور کوئی نہیں۔