Book - حدیث 2166

كِتَابُ النِّكَاحِ بَابُ فِي إِتْيَانِ الْحَائِضِ وَمُبَاشَرَتِهَا صحیح حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى، عَنْ جَابِرِ بْنِ صُبْحٍ، قَالَ: سَمِعْتُ خِلَاسًا الْهَجَرِيَّ، قَالَ: سَمِعْتُ عَائِشَةَ رَضِي اللَّهُ عَنْهَا، تَقُولُ: كُنْتُ أَنَا وَرَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ نَبِيتُ فِي الشِّعَارِ الْوَاحِدِ، وَأَنَا حَائِضٌ طَامِثٌ، فَإِنْ أَصَابَهُ مِنِّي شَيْءٌ, غَسَلَ مَكَانَهُ وَلَمْ يَعْدُهُ، وَإِنْ أَصَابَ -تَعْنِي: ثَوْبَهُ -مِنْهُ شَيْءٌ, غَسَلَ مَكَانَهُ وَلَمْ يَعْدُهُ وَصَلَّى فِيهِ.

ترجمہ Book - حدیث 2166

کتاب: نکاح کے احکام و مسائل باب: ایام حیض میں بیوی سے مجامعت ( ہمبستری کرنے ) اور مباشرت ( مباشرت ( بغل گیر ہونے ) کا مسئلہ جناب خلاس ہجری کہتے ہیں کہ میں نے سیدہ عائشہ ؓا کو بیان کرتے ہوئے سنا کہ میں اور رسول اللہ ﷺ ایک ہی چادر میں سو جاتے تھے حالانکہ میں ایام میں ہوتی ۔ اگر آپ ﷺ کو مجھ سے کچھ ( خون وغیرہ ) لگ جاتا تو اس جگہ کو دھو لیتے اور اس جگہ سے مزید آگے نہ دھوتے ۔ اور اگر آپ ﷺ کے کپڑے کو کچھ لگ جاتا تو اسی جگہ کو دھو لیتے اور اس سے تجاوز نہ کرتے اور اسی میں نماز پڑھ لیتے ۔ فوائد پیچھے حدیث 269 میں گزر چکے ہیں