Book - حدیث 209

كِتَابُ الطَّهَارَةِ بَابُ فِي الْمَذْيِ صحیح حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ الْقَعْنَبِيُّ، قَالَ: حَدَّثَنَا أَبِي، عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ حَدِيثٍ حَدَّثَهُ، عَنْ عَلِيِّ بْنِ أَبِي طَالِبٍ قَالَ: قُلْتُ لِلْمِقْدَادِ: فَذَكَرَ مَعْنَاهُ.قَالَ أَبُو دَاوُد: وَرَوَاهُ الْمُفَضَّلُ بْنُ فَضَالَةَ وَجَمَاعَةٌ وَالثَّوْرِيُّ وَابْنُ عُيَيْنَةَ، عَنْ هِشَامٍ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ عَلِيِّ بْنِ أَبِي طَالِبٍ وَرَوَاهُ ابْنُ إِسْحَاقَ، عَنْ هِشَامِ بْنِ عُرْوَةَ، عَنْ أَبِيهِ عَنِ الْمِقْدَادِ عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ لَمْ يَذْكُرْ >أُنْثَيَيْهِ

ترجمہ Book - حدیث 209

کتاب: طہارت کے مسائل باب: مذی کامسئلہ سیدنا علی بن ابی طالب ؓ کہتے ہیں کہ میں نے مقداد ؓ سے کہا اور مذکورہ بالا حدیث کے ہم معنی بیان کیا ۔ امام ابوداؤد ؓ کہتے ہیں : اس کو مفضل بن فضالہ ، ثوری اور ابن عیینہ نے «هشام عن أبيه عن علي» کی سند سے روایت کیا ہے ۔ اور ابن اسحٰق نے «عن هشام عن أبيه عن علي بن أبي طالب ورواه ابن إسحاق عن هشام بن عروة عن أبيه عن المقداد عن النبي صلى الله عليه وسلم» کی سند سے روایت کیا ہے اور اس میں خصیتین کے دھونے کا ذکر نہیں کیا ۔ 1۔ حدیث 208اور209ضعیف ہیں۔ اس لیےخصیتین کادھوناضروری نہیں ۔صرف ذکرکادھولیناکافی ہے۔ تاہم بشرط صحت (جیساکہ شیخ البانی ﷫کےنزدیک صحیح ہیں)ذکرکےساتھ خصیتین کابھی دھوناضروری ہوگا۔ 2۔ منی جب زورسےاوراچھل کےنکلےتوغسل واجب ہوجاتاہے۔مگرمذی‘ودی اورجریان منی سےصرف وضولازم آتاہے۔ 3۔ وضوکااطلاق دومعانی پرہوتاہے۔ ایک صرف لغوی اعتبارسےیعنی منہ ہاتھ دھولینا۔ دوسرااصطلاحی وضویعنی جووضو‘نمازکےلیےکیاجاتاہے‘مذکوربالاحدیث میں اسی اصطلاحی وضوکاذکرہے۔