Book - حدیث 2031

كِتَابُ الْمَنَاسِكِ بَابُ فِي مَالِ الْكَعْبَةِ صحیح حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَنْبَلٍ حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ مُحَمَّدٍ الْمُحَارِبِيُّ عَنْ الشَّيْبَانِيِّ عَنْ وَاصِلٍ الْأَحْدَبِ عَنْ شَقِيقٍ عَنْ شَيْبَةَ يَعْنِي ابْنَ عُثْمَانَ قَالَ قَعَدَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ فِي مَقْعَدِكَ الَّذِي أَنْتَ فِيهِ فَقَالَ لَا أَخْرُجُ حَتَّى أَقْسِمَ مَالَ الْكَعْبَةِ قَالَ قُلْتُ مَا أَنْتَ بِفَاعِلٍ قَالَ بَلَى لَأَفْعَلَنَّ قَالَ قُلْتُ مَا أَنْتَ بِفَاعِلٍ قَالَ لِمَ قُلْتُ لِأَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَدْ رَأَى مَكَانَهُ وَأَبُو بَكْرٍ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ وَهُمَا أَحْوَجُ مِنْكَ إِلَى الْمَالِ فَلَمْ يُخْرِجَاهُ فَقَامَ فَخَرَجَ

ترجمہ Book - حدیث 2031

کتاب: اعمال حج اور اس کے احکام و مسائل باب: کعبہ کے مال کا بیان سیدنا شیبہ بن عثمان ؓ بیان کرتے ہیں کہ سیدنا عمر بن خطاب ؓ اسی جگہ بیٹھے ہوئے تھے جہاں تم بیٹھے ہو تو انہوں نے کہا : میں یہاں سے نہیں نکلوں گا حتیٰ کہ کعبہ کا مال تقسیم کر دوں ۔ شیبہ کہتے ہیں کہ میں نے کہا : آپ یہ نہیں کر سکتے ۔ انہوں نے کہا : کیوں نہیں ، میں ضرور کروں گا ۔ میں نے کہا : آپ نہیں کر سکتے ۔ کہنے لگے : کیوں ؟ میں نے کہا : بلاشبہ رسول اللہ ﷺ کو اس مال کی خبر تھی اور ابوبکر ؓ کو بھی علم تھا اور وہ اس مال کے آپ سے زیادہ ضرورت مند تھے مگر انہوں نے اسے نہیں نکالا ۔ چنانچہ وہ اٹھے اور چلے گئے ۔ 1۔ اس سے مراد وہ مال ہے جو کعبہ میں بطور نذر آتا اور جمع رہتاتھا۔2۔حق کے اظہار وبیان میں جراءت سے کام لینا چاہیے۔اس میں اللہ عزوجل نے قوت رکھی ہے۔اور سلیم الفطرت اس سے انکار نہیں کرسکتا۔3۔اس کے ہم معنی روایت صحیح بخاری میں ہے۔جس سے اس روایت کی تایئد ہوتی ہے۔