Book - حدیث 2013

كِتَابُ الْمَنَاسِكِ بَابُ التَّحصِيبِ صحیح حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ حَنْبَلٍ حَدَّثَنَا عَفَّانُ حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ سَلَمَةَ أَخْبَرَنَا حُمَيْدٌ عَنْ بَكْرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ عَنْ ابْنِ عُمَرَ وَأَيُّوبُ عَنْ نَافِعٍ عَنْ ابْنِ عُمَرَ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَّى الظُّهْرَ وَالْعَصْرَ وَالْمَغْرِبَ وَالْعِشَاءَ بِالْبَطْحَاءِ ثُمَّ هَجَعَ بِهَا هَجْعَةً ثُمَّ دَخَلَ مَكَّةَ وَكَانَ ابْنُ عُمَرَ يَفْعَلُهُ

ترجمہ Book - حدیث 2013

کتاب: اعمال حج اور اس کے احکام و مسائل باب: وادی محصب ( ابطح ) میں اترنے کا بیان سیدنا ابن عمر ؓ سے مروی ہے کہ نبی کریم ﷺ نے بطحاء میں ظہر ، عصر ، مغرب اور عشاء کی نمازیں پڑھیں ، پھر کچھ دیر سوئے ، پھر مکہ میں داخل ہوئے ۔ اور ابن عمر ؓ ایسے ہی کیا کرتے تھے ۔ ایام تشریق میں رمی جمرات زوال کے بعد ہوتی ہے۔آخری دن نبی کریمﷺ زوال ہوتے ہی منیٰ سے روانہ ہوگئے رمی کی اور پھر بطحا میں آکر نماز ظہر پڑھی۔