Book - حدیث 1404

كِتَابُ سُجُودِ القُرآنِ بَابُ مَنْ لَمْ يَرَ السُّجُودَ فِي الْمُفَصَّلِ صحيح حَدَّثَنَا هَنَّادُ بْنُ السَّرِيِّ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ عَنْ ابْنِ أَبِي ذِئْبٍ عَنْ يَزِيدَ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ قُسَيْطٍ عَنْ عَطَاءِ بْنِ يَسَارٍ عَنْ زَيْدِ بْنِ ثَابِتٍ قَالَ قَرَأْتُ عَلَى رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ النَّجْمَ فَلَمْ يَسْجُدْ فِيهَا حَدَّثَنَا ابْنُ السَّرْحِ أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ حَدَّثَنَا أَبُو صَخْرٍ عَنْ ابْنِ قُسَيْطٍ عَنْ خَارِجَةَ بْنِ زَيْدِ بْنِ ثَابِتٍ عَنْ أَبِيهِ عَنْ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِمَعْنَاهُ قَالَ أَبُو دَاوُد كَانَ زَيْدٌ الْإِمَامَ فَلَمْ يَسْجُدْ فِيهَا

ترجمہ Book - حدیث 1404

کتاب: سجدہ تلاوت کے احکام و مسائل باب: ان حضرات کی دلیل جو مفصل ( آخری منزل ) میں سجدہ کے قائل نہیں سیدنا زید بن ثابت ؓ بیان کرتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ ﷺ کے سامنے سورۃ النجم کی تلاوت کی مگر آپ ﷺ نے اس میں سجدہ نہیں کیا ۔ سجدہ تلاوت واجب نہیں ہے۔اس لئے چھوڑا بھی جاسکتا ہے۔مگر اس سے تسائل اور غفلت کو اپنی عادت بنالینا کسی طرح درست نہیں۔