Book - حدیث 1168

كِتَابُ صَلَاةِ الِاسْتِسْقَاءِ بَابُ رَفْعِ الْيَدَيْنِ فِي الِاسْتِسْقَاءِ صحیح حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ سَلَمَةَ الْمُرَادِيُّ، أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ، عَنْ حَيْوَةَ وَعُمَرَ بْنِ مَالِكٍ عَنِ ابْنِ الْهَادِ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ إِبْرَاهِيمَ، عَنْ عُمَيْرٍ -مَوْلَى بَنِي آبِي اللَّحْمِ-، أَنَّهُ رَأَى النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَسْتَسْقِي عِنْدَ أَحْجَارِ الزَّيْتِ -قَرِيبًا مِنَ الزَّوْرَاءِ-، قَائِمًا يَدْعُو يَسْتَسْقِي، رَافِعًا يَدَيْهِ قِبَلَ وَجْهِهِ، لَا يُجَاوِزُ بِهِمَا رَأْسَهُ

ترجمہ Book - حدیث 1168

کتاب: نماز استسقا کے احکام و مسائل باب: استسقاء میں ہاتھ اٹھا کر دعا مانگنا سیدنا عمیر مولیٰ بنی آبی اللحم ؓ کا بیان ہے کہ انہوں نے نبی کریم ﷺ کو مقام زوراء کے قریب ” احجار زیت “ کے پاس بارش کی دعا کرتے دیکھا ، آپ ﷺ اپنے چہرے کے سامنے ہاتھ اٹھائے کھڑے تھے ، مگر ہاتھ سر سے اونچے نہ تھے ۔