Book - حدیث 1086

کِتَابُ تَفْرِيعِ أَبْوَابِ الْجُمُعَةِ بَابُ فِي وَقْتِ الْجُمُعَةِ صحیح حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ كَثِيرٍ، أَخْبَرَنَا سُفْيَانُ، عَنْ أَبِي حَازِمٍ، عَنْ سَهْلِ بْنِ سَعْدٍ، قَالَ: كُنَّا نَقِيلُ وَنَتَغَدَّى بَعْدَ الْجُمُعَةِ .

ترجمہ Book - حدیث 1086

کتاب: جمعۃ المبارک کے احکام ومسائل باب: جمعہ پڑھنے کا وقت سیدنا سہل بن سعد ؓ کا بیان ہے کہ ہم لوگ جمعہ کے بعد ہی کھانا کھاتے اور قیلولہ کرتے تھے ۔ ان احادیث کا مفہوم یہ ہے کہ نبی کریم ﷺ کا جمعہ کے زوال کے فورا بعد ہوتا تھا۔چونکہ خطبہ مختصر اور نماز قدرے لمبی ہوتی تھی۔اس لئے صحابہ کرام رضوان اللہ عنہم اجمعین واپسی پردیواروں کا اتنا سایہ نہ پاتے تھے کہ اس سے سایہ حاصل کرسکتے تھے جیسے کہ صحیح مسلم کی حدیث۔860 کے الفاظ ہیں۔(وما تجد فيئا فستظل به)یعنی سایہ تو ہوتا تھا مگر بہت کم غداء دوپہر کے کھانے اور قیلولہ نصف النہار میں استراحت کرنے کو کہتے ہیں۔اس سے بعض لوگوں نے استدلال کیاہے کہ جمعہ قبل الزوال ہوتا تھا۔مگر یہ استدلال بے محل ہے۔ دوپہر کا کھانا دیر کرکے کھایاجائے تو بھی اسے غداء ہی کہتے ہیں۔اور نصف النہار کی استراحت میں تاخیر کی جائے۔ تو بھی اسے قیلولہ ہی کہتے ہیں۔ لہذا جمعہ کے بعد کھانے اور قیلولہ کرنے سے یہ لازم نہیں آتا کہ جمعہ قبل الزوال ہوتا تھا۔