Book - حدیث 1004

کِتَابُ تَفْرِيعِ اسْتِفْتَاحِ الصَّلَاةِ بَابُ حَذْفِ التَّسْلِيمِ ضعیف حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ مُحَمَّدِ بْنِ حَنْبَلٍ، حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ يُوسُفَ الْفِرْيَابِيُّ، حَدَّثَنَا الْأَوْزَاعِيُّ، عَنْ قُرَّةَ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ أَبِي سَلَمَةَ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّم:َ >حَذْفُ السَّلَامِ سُنَّةٌ<. قَالَ عِيسَى نَهَانِي: ابْنُ الْمُبَارَكِ، عَنْ رَفْعِ هَذَا الْحَدِيثِ. قَالَ أَبو دَاود: سَمِعْت أَبَا عُمَيْرٍ عِيسَى بْنَ يُونُسَ الْفَاخُورِيَّ الرَّمْلِيَّ قَالَ لَمَّا رَجَعَ الْفِرْيَابِيُّ مِنْ مَكَّةَ تَرَكَ رَفْعَ هَذَا الْحَدِيثِ وَقَالَ نَهَاهُ أَحْمَدُ بْنُ حَنْبَلٍ، عَنْ رَفْعِهِ.

ترجمہ Book - حدیث 1004

کتاب: نماز شروع کرنے کے احکام ومسائل باب: سلام کو لمبا کیے بغیر ، کہنا سیدنا ابوہریرہ ؓ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا ” سلام کو لمبا کیے بغیر کہنا سنت ہے.عیسیٰ مہتے ہیں کہ جناب ابن مبارک نے مجھےاس حدیث کو مرفوع بیان کرنےسے منع فرمایاتھا-امام ابو داودکہتے ہیں.ّمیں نےابو عمیرعیسٰی بن یونس فاخوری رملی کو سنا‘وہ بیان کرتےتھےکہ فریابی جب مکہ سےواپس لوٹےتوانہوں نےاس حدیث کومرفوع بیان کرناچھوڑ دیا تھااورکہا مجھےامام امد بن حمبل ؓ نے اس حدیث مو مرفوع بیان کرنےسے روکا ہے- اس کا مفہوم یہ ہے کہ سلام کو مد کے ساتھ لمبا کر کے نہ کہا جائے۔ بلکہ درمیانی انداز سے کہے لیکن یہ روایت ضعیف ہے۔