کتاب: طلاق کے مسائل - صفحہ 52
حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’اس ذات کی قسم جس کے ہاتھ میں میری جان ہے جب کوئی شخص اپنی بیوی کو اپنے بستر پر بلائے اور بیوی انکار کر دے تو وہ ذات جو آسمانوں میں ہے ناراض رہتی ہے حتیٰ کہ اس کا شوہر اس سے راضی ہو جائے۔‘‘اسے مسلم نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ نمبر47:شوہر سے بہت زیادہ محبت کرنے والی اور بہت زیادہ بچے جننے والی عورت بہترین رفیقہ حیات ہے۔ عَنْ اَنَسٍ رضی اللّٰه عنہ عَنِ النَّبِیِّ صلی اللّٰه علیہ وسلم قَالَ تَزَوَّجُوْا الْوَدُوْدَ الْوَلُوْدُ فَاِنِّیْ مُکَاثِرٌ بِکُمُ الْاَنْبِیَائَ یَوْمَ الْقِیَامَۃِ ۔رَوَاہُ اَحْمَدُ وَالطِّبْرَانِیُّ[1] حضرت انسرضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’محبت کرنے والی اور زیادہ بچے جننے والی عورت سے نکاح کرو قیامت کے روز میں دوسرے انبیاء کرامoکے مقابلے میں تمہاری اس کثرت کی وجہ سے فخر کروںگا۔‘‘اسے احمد اور طبرانی نے روایت کیاہے۔ مسئلہ نمبر48:پانچ نمازوں کی پابندی کرنے والی ،رمضان کے روزے رکھنے والی ، پاکدامن اور شوہر کی اطاعت گزار خاتون بہترین رفیقہ حیات ہے۔ عَنْ اَبِیْ ہُرَیْرَۃَ رضی اللّٰه عنہ قَالَ : قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللّٰه علیہ وسلم ((اِذَا صَلَّتِ الْمَرْأَۃُ خَمْسَہَا وَ صَامَتْ شَہْرَہَا وَ حَصَّنَتْ فَرْجَہَا وَ اَطَاعَتْ زَوْجَہَا قِیْلَ لَہَا ادْخُلِی الْجَنَّۃَ مِنْ اَیِّ اَبْوَابِ الْجَنَّۃِ شِئْتِ )) رَوَاہُ ابْنُ حَبَّانَ[2] (صحیح) حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’جو عورت پانچ نمازیں ادا کرے ،رمضان کے روزے رکھے ،اپنی شرمگاہ کی حفاظت کرے اور اپنے شوہر کی فرمانبرداری کرے اسے (قیامت کے روز )کہا جائے گا جنت کے (آٹھوں) دروازوں میں سے جس سے چاہے داخل ہو جائے۔‘‘اسے ابن حبان نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ نمبر49:شوہر کو خوش رکھنے ،شوہر کی اطاعت کرنے اور اپنی جان و مال شوہر [1] صحیح الجامع الصغیر و زیادۃ ، للالبانی ، الجزء الثالث ، رقم الحدیث 3294 [2] کتاب الفضائل ، باب فی نساء قریش [3] کتاب النکاح ، باب تحریم امتناعہا من فراش زوجہا