کتاب: تفسیر النساء - صفحہ 459
ہو اور انہیں بھی اپنی زیب وزینت کا اظہار مقصود ہو یا ان کا بھی بناؤ سنگھار کرنے یا اس کی نمود ونمائش کرنے کی جی چاہتا ہو تو انہیں یہ رخصت نہیں ملے گی۔ ﴿وَّاَنْ یَّسْتَعْفِفْنَ خَیْرٌ لَہُنَّ﴾ یعنی اگر بڑی بوڑھی عورتیں بھی اس رخصت سے فائدہ نہ اٹھائیں تو یہی بات ان کے حق میں بہتر ہے وجہ یہ ہے کہ اسے دیکھنے والے سارے بوڑھے متقی لوگ تو نہیں ہوں گے، ہو سکتا ہے کہ کوئی شہوت کا مارا اوباش اس سے بھی چھیڑ چھاڑ شروع کر دے اور اس پر بھی ہاتھ صاف کرنے سے نہ چوکے لہٰذا بوڑھی عورتیں بھی اس رخصت کا استعمال موقع ومحل کا لحاظ رکھ کر کریں بصورت دیگر اس رخصت پر عمل نہ کریں یہی چیز ان کے حق میں بھی بہتر ہے اور معاشرے حق میں بھی۔[1] [1] ایضاً: ص ۳/ ۲۸۵۔