کتاب: شرعی احکام کی خلاف ورزی پر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فیصلے - صفحہ 45
حد قذف وخمر میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کاحکم اور جولواطت میں آپ سے مروی ہے کتاب نسائی میں سیدہ عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ جب میرے متعلق معذرت نازل ہوئی تو نبی صلی اللہ علیہ وسلم منبر پر کھڑے ہوئے اور اس بات کا ذکر فرمایا اور اللہ تعالیٰ کی نازل کردہ آیات تلاوت کیں اور جب منبر سے اترے تو دو مرد اور ایک عورت کو لایا گیا اور ان کوحد ماری گئی۔[1] بخاری میں عروہ سے ہے کہ اہل افک میں جن کا ذکر کیا گیا وہ یہ تین ہیں ۔1۔حسان بن ثابت 2۔مسطح 3۔حمنہ بن حجش،باقی لوگ بھی تھے مگر میں انہیں نہیں جانتا،لیکن وہ ایک جتھا تھے جس طرح اللہ تعالیٰ نے فرمایا اور جو شخص اس کام کو بڑھانے اور بڑا کرنے کا ذمہ دار تھا[2] وہ عبداللہ بن ابی بن سلول تھا۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے لواطت میں رجم کرنا یا کوئی فیصلہ دینا ثابت نہیں ۔مگر اتنا ثابت ہے کہ آپ نے فرمایا : "اقْتُلُوا الْفَاعِلَ وَالْمَفْعُولَ بِهِ "[3] یعنی یہ کام کرنے والے اور جس کے ساتھ کیاگیاہے دونوں کو قتل کر دوا س حدیث کوسیدنا ابوہریرہ رضی اللہ عنہ کی حدیث میں ہے۔"أُحْصِنَا أَوْ لَمْ يُحْصَنَا"[4] یعنی وہ شادی شدہ ہوں یا نہ ہوں ۔ [1] ابوداود(4474) 4475) الترمذی (3181) عن عائشه وھوحدیث حسن۔ [2] البخاری 4757 عن عاششه رضی اللّٰه عنه۔ [3] احمد فی المسند (2733) والحاکم 355/4) والبیھقی فی السنن (233/8) عن ابن عباس فی اسنادہ عباد بن منصور ضعیف مدلس۔ [4] ابن ماجه (2562) والحاکم 4/355) عن ابی ھریرة رضی اللّٰه عنه۔