کتاب: نماز نبوی صحیح احادیث کی روشنی میں مع حصن المسلم - صفحہ 329
2. اللَّهمَّ إنِّي أعوذُ بِكَ منَ الهمِّ والحزنِ، و العَجزِ والكسلِ، و الجُبنِ والبُخلِ وضلع الدینِ غلَبةِ الرِّجالِ ’’اے اللہ! یقینا میں تیری پناہ میں آتا ہوں پریشانی اورغم سے، عاجز ہوجانے اور کاہلی سے، بزدلی اور بخل سے اور قرض کے بوجھ اور لوگوں کے تسلط سے۔‘‘[1] 3. اللَّهمَّ إني أعوذُ بك من عذابِ القبرِ وأَعُوذُ بكَ مِن فِتْنَةِ المَسِيحِ الدَّجّالِ وأَعُوذُ بكَ مِن فِتْنَةِ المَحْيا والمَماتِ اللَّهمَّ إنِّي أعوذُ بِكَ من الْكسَلِ والْهرمِ والمأثمِ والمغرمِ ’’اے اللہ! بے شک میں عذابِ قبر سے تیری پناہ میں آتا ہوں اور فتنۂ مسیح دجال سے تیری پناہ میں آتا ہوں اور فتنۂ زندگی اور موت سے تیری پناہ میں آتا ہوں ، اے اللہ! یقینا میں گناہ اور قرض سے تیری پناہ میں آتا ہوں۔‘‘ [2] 4. اللَّهُمَّ رَبَّ السَّمَاوَاتِ وَرَبَّ الْأَرْضِ وَرَبَّ الْعَرْشِ الْعَظِيمِ رَبَّنَا وَرَبَّ كُلِّ شَيْءٍ فَالِقَ الْحَبِّ وَالنَّوَى وَمُنْزِلَ التَّوْرَاةِ وَالْإِنْجِيلِ وَالْفُرْقَانِ أَعُوذُ بِكَ مِنْ شَرِّ كُلِّ شَيْءٍ أَنْتَ آخِذٌ بِنَاصِيَتِهِ اللَّهُمَّ أَنْتَ الْأَوَّلُ فَلَيْسَ قَبْلَكَ شَيْءٌ وَأَنْتَ الْآخِرُ فَلَيْسَ بَعْدَكَ شَيْءٌ وَأَنْتَ الظَّاهِرُ فَلَيْسَ فَوْقَكَ شَيْءٌ وَأَنْتَ الْبَاطِنُ فَلَيْسَ دُونَكَ شَيْءٌ اقْضِ عَنَّا الدَّيْنَ وَأَغْنِنَا مِنْ الْفَقْرِ ’’اے اللہ! ساتوں آسمانوں کے رب! اور زمین کے رب! اور عرشِ عظیم کے رب! اے ہمارے اور ہر چیز کے رب! اے دانے اور گٹھلیوں کو پھاڑنے والے! اور اے تورات و انجیل اور فرقان (قرآن)نازل کرنے والے! میں تجھ سے ہر اس چیز کے شر سے پناہ مانگتا ہوں جس کی پیشانی توپکڑے ہوئے [1] صحیح البخاري، حدیث: 6369۔ [2] صحیح مسلم، حدیث: 589۔