کتاب: مختصر فقہ الصلاۃ نماز نبوی - صفحہ 348
نبی محمد ( صلی اللہ علیہ وسلم ) پر اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی آل پر برکتیں نازل فرما، جس طرح کہ تو نے ابراہیم (u) اور ان کی آل پر برکتیں نازل کیں، یقینا تو صاحبِ حمد و مجد ہے۔‘‘ تیسرا صیغہ: ان میں سے تیسرا صیغہ مسند احمد و معانی الآثار طحاوی اور بعض دیگر کتبِ حدیث میں ایک صحابی رضی اللہ عنہ سے وارد ہوا ہے، جو خود نبی صلی اللہ علیہ وسلم پڑھا کرتے تھے اور وہ یوں ہے: (( اَللّٰہُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰی اَہْلِ بَیْتِہٖ وَعَلٰی اَزْوَاجِہٖ وَذُرِّیَّتِہٖ کَمَا صَلَّیْتَ عَلٰی آلِ اِبْرَاہِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ، وَبَارِکْ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰی اَہْلِ بَیْتِہٖ وَعَلٰی اَزْوَاجِہٖ وَذُرِّیَّتِہٖ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰی آلِ اِبْرَاہِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ )) [1] ’’اے اللہ! درود بھیج حضرت محمد ( صلی اللہ علیہ وسلم ) پر، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے اہلِ بیت پر اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی ازواج و اولاد پر، جس طرح کہ تو نے آلِ ابراہیم (u) پر درود بھیجا، یقینا تو حمید اور مجید ہے، اور برکتیں نازل کر حضرت محمد ( صلی اللہ علیہ وسلم ) پر، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے اہلِ بیت پر اور ازواج و اولاد پر، جس طرح کہ تو نے برکتیں نازل کیں آلِ ابراہیم (u) پر، یقینا تو بڑا صاحبِ حمد و مجد ہے۔‘‘ چوتھا صیغہ: درود شریف کا چوتھا صیغہ صحیح مسلم، ابی عوانہ ، ابو داود، ترمذی، نسائی، دارقطنی، مستدرک حاکم، ابن حبان، ابن خزیمہ، موطا امام مالک، مسند احمد، بیہقی اور مصنف ابن ابی شیبہ میں ہے اور وہ حضرت ابو مسعود انصاری رضی اللہ عنہ سے مروی ہے، جس میں ہے: [1] صحیح البخاري (۶/ ۴۰۸) صحیح مسلم (۲/ ۴/ ۱۲۶) الفتح الرّباني (۴/ ۲۳/ ۲۴) تفہیم القرآن (۴/ ۱۲۵) وجلاء الأفہام (ص: ۷، ۱۰) شرح الشفاء (۳/ ۷۶۸) [2] سنن النسائي (۱۲۹۰) الفتح الرّباني (۴/ ۲۵) صفۃ الصلاۃ (ص: ۹۹)