کتاب: مولانا محمد اسماعیل سلفی رحمہ اللہ - صفحہ 151
حضرت مولانا ثناءاللہ (فاضل درسِ نظامی۔ شیخ الحدیث جامعہ تعلیماتِ اسلامیہ فیصل آباد) مولانا ثناءاللہ صاحب کے والد محترم جناب علی محمد صاحب نے مسلک اہل حدیث قبول کیا اور اپنے ہونہار بیٹے کو دینی تعلیم حاصل کرنے کے لیے وقف کیا۔ مولانا ثناءاللہ نے حسب ذیل دینی مدارس سے کسب فیض کیا۔ (1) ابتدائی تعلیم مدرسہ عربیہ خانپور تحصیل و ضلع ہوشیار پور (مشرقی پنجاب) (2) مدرسہ کریمیہ حنفیہ اور دارالحدیث رحمانیہ دہلی (3) تقسیم ملک کے بعد جامعہ محمدیہ گوجرانوالہ میں داخلہ لیا اور شیخ الحدیث مولانا محمد اسماعیل سلفی رحمہ اللہ کی زیر نگرانی تمام علوم پر مہارت حاصل کی اور فارغ التحصیل ہوئے۔ شیخ الحدیث مولانا عبدالجبار کھنڈیلوی رحمہ اللہ نے آپ کو اعزازی سند عطا کی۔ تدریسی خدمات حصول علم کے بعد آپ نے اپنے آپ کو تدریس کے لیے وقف کر دیا اور درجِ ذیل دینی مدارس میں علم و فضل کے موتی بکھیرتے رہے۔ (1)مدرسہ تعلیم الاسلام اوڈانوالہ (2) مدرسہ دارالحدیث محمدیہ ملتان (3) مدرسہ دارالحدیث بورے والہ (4) مدرسہ دار الحدیث محمدیہ حافظ آباد (5) جامعہ سلفیہ فیصل آباد ملک کے بڑے فاضل علماء آپ کے شاگردوں میں شامل ہیں جن میں حضرت مولانا محمد صادق خلیل، مولانا عبدالقادر ندوی، شیخ الحدیث مولانا محمد رفیق، نیز مولانا محمد اسحاق بھٹی مؤلف تذکرہ فقہاء ہند و مدیر سہ ماہی’’المعارف‘‘ادارہ ثقافتِ اسلامیہ لاہور بھی آپ کے شاگردانِ رشید میں شامل ہیں۔ [1] [1] تذکرہ علمائےاہل حدیث ج دوم ص35۔ 233