کتاب: محدث شمارہ 15 - صفحہ 47
کی گئی ہے۔ مرزائیت ایک ایسا فتنہ ہے جسے انگریز سرکار نے اپنے سیاسی مقاصد کے لئے بطور خاص اُٹھایا اور اس کی پرورش کی۔ اسلام اور مسلمانوں کو جس قدر نقصان موجودہ زمانے میں مرزائیت سے پہنچا ہے وہ ظاہر و باہر ہے۔ مرزا غلام احمد قادیانی جسے انگریز سرکار نے اس فتنہ کا بانی ہونے کا موقع فراہم کیا، اس کا کردار اتنا عجیب ہے کہ عقل حیران ہے کہ یہ شخص ہے کیا؟ اور کیا کہنا چاہتا ہے؟ اس شخص کی تحریر ایسی گنجلک اور پیچیدہ ہے کہ قاری سر پیٹ کر رہ جائے، باتیں ایسی گول مول کہ عقل چکرا جائے۔ اس کی خاکساری ایسی کہ خود کو آدمی کی شرمگاہ قرار دیا ہے۔ سخت کلامی ایسی کہ مخالفین کو سور، کتے ، بے ایمان، بد ذات، خبیث اور ولد الحرام کے دشنام سے بے تکلف نوازتا چلا جائے۔ اسی شخص کے بارے میں منشی محمد عبد اللہ صاحب معمار امرتسری نے ’’مغالطاتِ مرزا عرف الہامی بوتل‘‘ کے عنوان سے یہ رسالہ مرتب کیا ہے۔ کتاب مفید ہونے کے ساتھ ساتھ خاصی دل چسپ بھی ہے۔ مرتب نے بڑی محنت اور عرق ریزی سے مرزا غلام احمد قادیانی کی ان تحریروں کو جمع کیا ہے جن میں وہ ایک جگہ کسی بات کا اعلان و دعویٰ کرتے ہیں تو دوسری جگہ اس سے انکار و تردید کرتے نظر آتے ہیں ۔ مرزائیت کو خود اس کے بانی کے الفاظ میں سمجھنے کے لئے ہم اس کتابچے کے مطالعہ کی پرزور سفارش کرتے ہیں ۔