کتاب: مسنون ذکر الٰہی، دعائیں - صفحہ 333
(( اَللّٰھُمَّ احْفَظْنِی بِالْاِسْلَامِ قَائِمًا وَاحْفَظْنِیْ بِالْاِسْلَامِ قَاعِدًا وَّاحْفَظْنِیْ بِالْاِسْلَامِ رَاقِدًا وَلَا تُشْمِتْ بِیْ عَدُوًّا وَلَا حَاسِدًا اَللّٰھُمَّ اِنِّیْ اَسْئَلُکَ مِنْ کُلِّ خَیْرٍ خَزَائِنُہٗ بِیَدِکَ وَاَعُوْذُ بِکَ مِنْ کُلِّ شَرِِّ خَزَائِنُہُ بِیَدَکَ )) [1] ’’اے اللہ! مجھے کھڑے، بیٹھے، لیٹے، ہر حال میں اسلام پر قائم رکھ اور دشمن اور حاسد کو مجھ پر ہنسنے کا موقع نہ دے، اے اللہ! میں تجھ سے ہر بھلائی کا سوال کرتا ہوں جس کے خزانے تیرے پاس ہیں اور میں ہر شرّ سے تیری پناہ چاہتا ہوں، جس کے خزانے تیرے پاس ہیں۔‘‘ خشوع و انکساری والی زندگی کی دُعا: 132 ۔نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم یہ دعا کرتے تھے: [1] مستدرک حاکم۔ السلسلۃ الصحیحۃ، رقم الحدیث (۱۵۴۰) صحیح الجامع، رقم الحدیث (۱۲۷۱) سُوئے حرم (ص: ۲۵۸)