کتاب: مسنون ذکر الٰہی، دعائیں - صفحہ 253
2 ۔دوسری دُعا: (( اَللّٰھُمَّ اِنَّا نَسْتَعِیْنُکَ وَ نَسْتَغْفِرُکَ۔۔۔ الخ ))ہے۔ لیکن سنن کبریٰ بیہقی اور ابن ابی شیبہ کی روایات کے مطابق یہ دُعا قنوتِ وتر نہیں، بلکہ قنوتِ فجر ہے۔ لہٰذا نمازِ وتر میں دُعائے قنوت کرنی ہو تو (( اَللّٰھُمَّ اھْدِنِیْ فِیْمَنْ ھَدَیْتَ۔۔۔ الخ )) کرنی چاہیے۔ البتہ حضرت عمر فاروق، عثمان غنی اور علی بن ابی طالب رضی اللہ عنہم کی طرح اگر کوئی نمازِ فجر میں قنوت کرنا چاہے تو یہ دُعا کرسکتا ہے: (( اَللّٰھُمَّ اِنَّا نَسْتَعِیْنُکَ وَ نَسْتَغْفِرُکَ وَنُثْنِیْ عَلَیْکَ الْخَیْرَ وَلَا نَکْفُرُکَ نَخْلَعُ وَنَتْرُکُ مَنْ یَّفْجُرُکَ اَللّٰھُمَّ اِیَّاکَ نَعْبُدُ وَلَکَ نُصَلِّیْ وَنَسْجُدُ وَ اِلَیْکَ نَسْعٰی وَنَحْفِدُ وَنَخْشٰی عَذَابَکَ الْجِدَّ وَنَرْجُو رَحْمَتَکَ اِنَّ عَذَابَکَ الْجِدَّ بَالْکُفَّارِ مُلْحِقٌ )) [1] ’’یا الٰہی! ہم تجھ سے مدد چاہتے ہیں اور تجھ سے بخشش مانگتے [1] سُنن الکبریٰ للبیہقي (۲/ ۲۱۰) مصنّف عبد الرزاق (۳/ ۱۱۰)، مصنّف ابن أبي شیبۃ (۲/ ۹۵) صحیح، إرواء الغلیل (۲؍ ۱۷۰)