کتاب: مسئلہ رؤیتِ ہلال اور 12 اسلامی مہینے - صفحہ 398
تین مرتبہ بسم اللہ سے شروع کر کے پڑھی … اللہ تعالیٰ فرماتا ہے: میں تمھیں گواہ بناتا ہوں کہ میں نے اسے بخش دیا ہے۔‘‘[1] (5) حضرت ابو امامہ باہلی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے، رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’جس نے قربانی کی رات دو رکعتیں نفلی نماز پڑھی، ہر رکعت میں پچاس مرتبہ سورئہ فاتحہ، پندرہ مرتبہ سورئہ اخلاص، پندرہ مرتبہ سورئہ فلق اور پندرہ مرتبہ سورئہ ناس پڑھی اور سلام پھیرنے کے بعد تین مرتبہ آیۃ الکرسی پڑھی اور پندرہ مرتبہ استغفار کیا۔ اللہ تعالیٰ اس کا نام جنتیوں میں لکھ دیتا ہے اور اس کے ظاہری و باطنی گناہ معاف فرما دیتا ہے اور ہر آیت کے بدلے ایک حج اور عمرے کا ثواب لکھا جاتا ہے اور گویا اس نے اسماعیل علیہ السلام کی اولاد سے ساٹھ غلام آزاد کر دیے اور اگر وہ آئندہ جمعے تک فوت ہو گیا تو شہداء کی موت مرا۔‘‘[2] (6) حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں: آپ نے فرمایا: ’’عرفہ کے دن اللہ تعالیٰ حاجیوں کو معاف فرما دیتا ہے اور مزدلفہ کے دن تاجروں کو معاف فرما دیتا ہے …۔‘‘[3] ان کے علاوہ اور بھی کئی موضوع احادیث ہیں جنھیں ذوالحجہ کی فضیلت کے بارے میں بیان کیا جاتا ہے۔ [1] یہ حدیث موضوع ہے، دیکھیے: الموضوعات لابن الجوزي: 55/2۔ [2] یہ حدیث موضوع اور من گھڑت ہے، دیکھیے: الموضوعات لابن الجوزي: 55/2، واللآلي المصنوعۃ: 63,62/2۔ [3] یہ حدیث موضوع اور من گھڑت ہے، دیکھیے:الموضوعات لابن الجوزي: 126/2، واللآلي المصنوعۃ للسیوطي: 124-121/2۔