کتاب: مجموعہ علوم القرآن - صفحہ 703
تفسیر أبي منصور،عبدالقاہر بن طاہر بغدادی شافعی رحمہ اللہ (المتوفی: ۴۲۹؁ھ) تفسیر الأخوین،اس کا نام’’طوالع الأنوار‘‘ ہے،جس کا ذکر آگے آئے گا۔ تفسیر الإدفوي،محمد بن علی بن احمدالمقری النحوی رحمہ اللہ (المتوفی: ۳۸۸؁ھ) اس کا نام ہے:’’الاستفتاء في علم القرآن‘‘ یہ تفسیر اکیس جلدوں میں ہے۔مولف نے اسے بارہ سالوں میں تالیف کیا۔باب الالف میں اس کا ذکر گزر چکا ہے۔ تفسیر آدم بن أبي إیاس العسقلاني (المتوفی: ۲۲۰؁ھ) تفسیر الأردبیلي۔ تفسیر الأزہري،جس کا نام’’التقریب‘‘ ہے،اس کا ذکر آگے آئے گا۔ تفسیر إسحٰق بن راہویہ،امام حافظ ابو یعقوب اسحق بن ابراہیم بن مخلد حنظلی مروزی نخعی نیسابوری رحمہ اللہ (المتوفی: ۲۳۸؁ھ) تفسیر الاسکندري،حسین بن ابی بکر نحوی مالکی رحمہ اللہ (المتوفی: ۷۴۱؁ھ) یہ تفسیر دس جلدوں میں ہے۔ تفسیر الإسفرائني،امام ابو المظفر طاہر بن محمد شاہ فور شافعی رحمہ اللہ (المتوفی: ۴۷۱؁ھ) تفسیر إسماعیل بن أحمد بن عبداللّٰہ الجیری النیسابوري الضریر (المتوفی: ۴۳۰؁ھ) تفسیر الأشج،ابو سعید عبداللہ بن سعید کندی رحمہ اللہ (المتوفی: ۲۵۷؁ھ) ثعلبی رحمہ اللہ نے اس کا ذکر کیا ہے۔ تفسیر الأصبہاني القدیم،ابو مسلم محمد بن علی معتزلی ادیب رحمہ اللہ (المتوفی: ۴۵۹؁ھ) تفسیر الأصبہاني الحافظ،شیخ امام ابو القاسم اسماعیل بن محمد بن فضل تیمی طلحی رحمہ اللہ (المتوفی: ۵۳۵؁ھ) ان کی کئی تفسیریں ہیں،ان میں سے ایک کبیر ہے،جس کا نام’’الجامع‘‘ ہے۔یہ تیس جلدوں میں ہے۔ایک تفسیر’’المعتمد‘‘ ہے۔جو دس جلدوں میں ہے۔ایک تفسیر’’الإیضاح‘‘ ہے،جو چار جلدوں میں ہے۔ایک’’الموضح‘‘ جو تین جلدوں میں ہے اور ایک کتاب التفسیر ہے،جو چند جلدوں میں اصبہانی زبان میں ہے۔ تفسیر الأصبہاني المشہور،شمس الدین ابو الثناء محمود بن عبدالرحمن شافعی رحمہ اللہ (المتوفی: ۷۴۹؁ھ) یہ کئی جلدوں میں ایک ضخیم تفسیر ہے،اس کی ابتدا یوں ہوتی ہے: