کتاب: جنت و جہنم کے نظارے - صفحہ 44
’’حدیقہ‘‘ کو حدیقہ شکل اور بناوٹ میں ’’حدقۃ العین‘‘ یعنی آنکھ کی سیاہی اور اس میں پانی کے وجود سے تشبیہ دیتے ہوئے کہاجاتا ہے ‘[1] اللہ عزوجل کا ارشاد ہے: ﴿ إِنَّ لِلْمُتَّقِينَ مَفَازًا ﴿٣١﴾ حَدَائِقَ وَأَعْنَابًا ﴾۔[2] یقینا متقیوں کے لئے کامیابی ہے۔ باغات ہیں اورانگور ہیں ۔ اللہ سبحانہ وتعالیٰ نے قرآن کریم میں ’’جنت‘‘ کا لفظ (واحد) چھیاسٹھ مرتبہ اور ’’جنات‘‘ کالفظ (جمع) انہتر مرتبہ ذکر فرمایا ہے۔[3] (ب) دار السلام (سلامتی کی منزل): اللہ عزوجل کا ارشاد ہے: ﴿ لَهُمْ دَارُ السَّلَامِ عِندَ رَبِّهِمْ ﴾۔[4] [1] دیکھئے: مفردات غریب القرآن للاصفہانی ص۲۲۳، والقاموس المحیط ص ۱۱۲۷، وتفسیر ابن کثیر ،۴/۴۶۶۔ [2] سورۃ النبأ: ۳۱،۳۲۔ [3] دیکھئے: المعجم المفھرس لالفاظ القرآن الکریم ص ۸۰ تا ۸۲۔ [4] سورۃ الانعام: ۱۲۷۔