کتاب: جنت و جہنم کے نظارے - صفحہ 207
یسقون من عصارۃ أھل النار طینۃ الخبال)) [1] غرور وتکبر کرنے والے قیامت کے دن انسانوں کی شکل میں باریک سرخ چینٹیوں کے مثل ہوں گے، انہیں ذلت وخواری ہرجگہ سے گھیرے ہوئے ہوگی، انہیں ہانک کر جہنم کے ایک قید خانہ میں لے جایا جائے گا جس کا نام ’’بولس‘‘ہے،آگ انہیں ہر چہار جانب سے اپنی لپیٹ میں لئے ہوگی، انہیں ’’طینۃ الخبال‘‘ یعنی جہنمیوں کا نچوڑ (خون پیپ وغیرہ) پلایا جائے گا۔ [1] سنن ترمذی، حدیث (۲۶۲۳) ومسند احمد، ۲/ ۱۷۹، علامہ شیخ البانی رحمہ اللہ نے اسے صحیح سنن ترمذی (۲/۳۰۴) اور صحیح الجامع (۶/۳۲۷) میں حسن قرار دیا ہے۔