کتاب: جادو کا آسان علاج - صفحہ 62
نظرِ بد کا علاج و دَم نظرِ بد لگ جاتی ہے۔ قرآن کریم اور حدیثِ شریف سے بھی یہی پتہ چلتا ہے۔[1] نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ ’’نظر برحق ہے۔‘‘[2]اور ایک حدیث میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے یہ بھی فرمایا ہے کہ ’’اللہ کی قضاء و قدر کے بعد میری امت کے اکثر لوگوں کی موت کا سبب یہی نظرِ بد ہوگی۔‘‘[3] خود نبی صلی اللہ علیہ وسلم بیمار ہوئے تو حضرت جبرائیل علیہ السلام نے آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو دَم کیااور یہ دعا پڑھی: ((بِسْمِ اللّٰہِ یُبْرِیْکَ،وَمِنْ کُلِّ دَائٍ یَشْفِیْکَ وَ مِنْ شَرِّ حَاسِدٍ اِذَا حَسَدَ، وَ مِنْ کُلِّ ذِیْ عَیْنٍ ))۔ [4] ’’(میں )اللہ کے نام سے (دَم کرتا ہوں )وہ آپ ( صلی اللہ علیہ وسلم )کو ہر چیز سے شفا عطا کرے گا ،حاسد کے حسد سے ، اور ہر نظرِ بد والے کے شرّ سے بھی۔‘‘ جبریل علیہ السلام کے اس دَم میں بھی نظرِ بد کا ذکر موجود ہے ۔ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت [1] [یوسف، آیت: ۶۷] حضرت یعقوب علیہ السلام نے اپنے بیٹوں کو اسی نظرِ بد سے بچانے کے لیے الگ الگ دروازوں سے شہر میں داخل ہونے کا حکم دیا تھا۔ نیز سورہ القلم [آیت: ۵۱۔ ۵۲] اور سورۃ الفلق کی آخری آیت سے بھی یہی ظاہر ہوتا ہے۔ نیز دیکھیں: سنن ابن ماجہ، رقم الحدیث (۳۵۰۹) صحیح الجامع، رقم الحدیث، رقم الحدیث (۵۵۶) [2] صحیح البخاري (۴/ ۴۴) رقم الحدیث (۵۷۴۰) صحیح مسلم (۴/ ۱۷۱۹) رقم الحدیث (۲۱۸۸) [3] مسند الطیالسي (ص: ۲۴۲) صحیح الجامع، رقم الحدیث (۱۲۰۶) [4] صحیح مسلم (۴/ ۱۷۱۸) رقم الحدیث (۲۱۸۵)