کتاب: اسلام ہی ہمارا انتخاب کیوں ؟ - صفحہ 89
اسلام کی صورت میں وہ سچا دین مل گیاجس کی مجھے مدت سے تلاش تھی میں نے اپنا اچھا خاصا وقت قرآن کریم کے ایک انگریزی ترجمے کے مطالعے پر صرف کیا اور جب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے بعض فرمودات بار بار پڑھے تو میں یہ محسوس کیے بغیر نہ رہ سکا کہ اسلام کی صورت میں مجھے با لآخر وہ سچا دین مل گیا ہے جس کی مجھے ایک عرصے سے تلاش تھی۔ یہاں میں یہ کہنا چاہوں گا کہ مجھے یقین ہے کہ اگر میرے ملک اور دوسرے مغربی ممالک کے لوگوں کو اسلام کی تعلیمات اور اس کے مقاصد سے آگاہ کردیا جائے تو اسلام کی صفوں میں آئے دن تیزی سے اضافہ ہو گا۔لیکن بدقسمتی یہ ہے کہ بہت سے’’آزاد خیال‘‘ مفکرین کے ذہن میں شکوک و شبہات پائے جاتے ہیں اورکچھ قدامت پر ست محض اس وجہ سے اپنے پرانے عقائد سے چمٹے ہوئے ہیں کہ ان میں اپنے مذہب کے اصولوں سے اختلاف رکھنے کے باوجود اس کو چھوڑ کر اسلام قبول کرنے کی اخلاقی جرأت نہیں ہے۔ [1] [واکر ایچ ولیمز] (Walker H.Williams) میں نے اسلام اس لیے قبول کیا کہ یہ میرے اپنے خیالات کے عین مطابق ہے آج مسیحی اور یہودی جن عقائد کا پرچار کررہے ہیں ، ان کے بجائے اسلام قبول کرلیا جائے تو گویا انسان دین فطرت میں داخل ہوجاتا ہے جو کہ اولین ادوار کے سچے عیسائیوں یا یہودیوں کا دین تھا۔ اسلام میں رواداری اور عالمگیر انسانی بھائی چارے کا تصور موجود ہے، لہٰذا میں یہ کہہ سکتی [1] ۔ اسلامک ریویو، نومبر1933ئ، ج:21،ش:11،ص:367,366