کتاب: اجتماعی نظام - صفحہ 1401
(513) عورت کے ذبح کیے ہوئے جانور کا گوشت کھانا السلام علیکم ورحمة اللہ وبرکاتہ کیا مرد کیلئے یہ جائز ہے کہ وہ عورت کے ذبح کیے ہوئے جانور کا گوشت کھائے؟  الجواب بعون الوہاب بشرط صحة السؤال وعلیکم السلام ورحمة اللہ وبرکاتہ! الحمد للہ، والصلاة والسلام علیٰ رسول اللہ، أما بعد! ہاں یہ جائز ہے کہ مسلمان اس جانور کا گوشت کھائے جسے کسی عورت نے ذبح کیا ہو بشرطیکہ وہ جانور ایساہو جسے شریعت نے حلال قرار دیا ہو کیونکہ اشیاء میں اصل اباحت ہے اور پھر امام بخاریؒ نے حضرت کعب بن مالکؓ سے روایت کیا ہے ’’ایک عورت نے ایک بکری کوپتھر کے ساتھ ذبح کیا تھا‘ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے جب اس کے بارے میں پوچھا گیا تو آپ نے حکم دیا کہ اسے کھا لیا جائے‘‘۔ دیکھئے: صحیح البخاری‘ الذباتح‘ باب ماانہر الدم من الفصب والمروۃ والحدید‘ حدیث ۰۵۵ و سنن ابن ماجۃ‘ الذبائح‘ باب ذیحۃ المراۃ حدیث ۲۸۱۳۔ ھذا ما عندی واللہ اعلم بالصواب فتاویٰ اسلامیہ ج3ص476