کتاب: حج اور عمرہ کے مسائل - صفحہ 94
مَمْنُوْعَاتُ الْإِحْرَامِ حالت احرام میں ممنوع امور[1] مسئلہ 108: حالت احرام میں درج ذیل چیزوں کا استعمال نا جائز ہے۔ 1. سلا ہوا کپڑا پہننا (مردوں کے لئے) 2. سر پر پگڑی‘ ٹوپی یا کپڑا اوڑھنا (مردوں کے لئے) 3. موزے‘ جرابیں یا ایسا جوتا پہننا جو ٹخنوں سے اونچا ہو (مردوں کے لئے)۔ 4. جسم یا احرام کے کپڑوں پر خوشبو لگانا (عورتوں اور مردوں کے لئے)۔ عَنْ عَبْدِ اللّٰہِ بْنِ عُمَرَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہُمَا اَنَّ رَجُلاً قَالَ: یَا رَسُوْلَ اللّٰہِ صلی اللّٰهُ علیہ وسلم مَا یَلْبَسُ الْمُحْرِمُ مِنَ الثِّیَابِ ؟ قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلی اللّٰهُ علیہ وسلم (( لاَ یَلْبَسُ الْقُمُصَ وَلاَ الْعَمَائِمَ وَ لَا السَّرَاوِیْلاَتِ وَلاَ الْبَرَانِسَ وَ لاَ الْخِفَافَ الِاَّ أَحَدٌ لاَ یَجِدُ نَعْلَیْنِ فَلْیَلْبَسْ خُفَّیْنِ وَلْیَقْطَعْہُمَا اَسْفَلُ مِنَ الْکَعْبَیْنِ وَلاَ تَلْبَسُوْا مِنَ الثِّیَابِ شَیْئًا مَسَّہ زَعْفَرَانٌ اَوْ وَرْسٌ )) رَوَاہُ الْبُخَارِیُّ[2] حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ ایک آدمی نے عرض کیا ”یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ! محرم کون سے کپڑے پہنے؟“ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ”قمیص، پگڑی، پائجامہ اور کوٹ نہ پہنے نہ ہی موزے پہنے، ہاں البتہ جسے جوتیاں نہ ملیں وہ موزے ٹخنوں تک کاٹ کر پہن لے نیز زعفران یا ورس (یا کوئی بھی خوشبو) لگا ہوا کپڑا بھی استعمال نہ کرے۔“ اسے بخاری نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ 109: احرام پہننے کے بعد احرام کی چادروں یا جسم پر خوشبو لگانا منع ہے۔ [1] منتقي الاخبار، کتاب الحج، باب من احرم مطلقا، رقم الحدیث 3401.