کتاب: حج اور عمرہ کے مسائل - صفحہ 173
عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہُمَا مَرْفُوْعًا صَلَّی فِیْ الْمَسْجِدِ الْخَیْفِ سَبْعُوْنَ نَبِیًّا۔ رَوَاہُ الطَّبْرَانِیُّ [1] (حسن) حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کرتے ہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ’’مسجد خیف میں ستر انبیاء کرام نے نماز ادا فرمائی۔‘‘ اسے طبرانی نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ 350: جو متمتع یا قارن حاجی قربانی نہ دے سکے وہ ایام تشریق میں روزے رکھ سکتا ہے۔ عَنْ عَائِشَۃَ وَاِبْنِ عُمَرَ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہُمَا قَالاَ لَمْ یُرَخَّصْ فِیْ اَیَّامِ التَّشْرِیْقِ اَنْ یُصَمْنَ اِلاَّ لِمَنْ لَمْ یَجِدِ الْہُدْیَ۔ رَوَاہُ الْبُخَارِیُّ[2] حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا اور حضرت عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنہما فرماتے ہیں کہ ایام تشریق میں کسی آدمی کو روزہ رکھنے کی اجازت نہیں دی گئی سوائے اس (حاجی) کے جو قربانی نہ دے سکے۔ اسے بخاری نے روایت کیا ہے۔ [1] منتقی الاخبار ، کتاب العیدین ، باب الحث علی الذکر والطاعۃ فی ایام العشر وایام التشریق. [2] کتاب الحج ، باب زیارۃ البیت کل لیلۃ من لیالی منی.