کتاب: فتاویٰ ثنائیہ مدنیہ جلد نمبر3 - صفحہ 282
مسائل عید الفطر وصدقة الفطر مسائل عید الفطر سوال۔فطرانے کی رقم پورے رمضان میں کسی بھی وقت نکالی جا سکتی ہے یا صرف دو دن قبل یا عید سے قبل شرط لازم ہے، نیز فطرانے کی رقم یا زکوٰۃ کی رقم وہیں تقسیم کی جانی چاہیے۔ یا باہر بھیجی جا سکتی ہے۔ اس میں افضل کونسی چیز ہے؟ (ڈاکٹر حبیب الرحمن کیلانی) (۱۲ 12جون 2009ء) جواب۔ بہتر ہے کہ فطرانہ ان جنسوں سے دیا جائے جو حدیث میں منصوص ہیں۔ بوقتِ ضرورت پیسے بھی دیے جا سکتے ہیں اس کے اخراج کا بہتر وقت نمازِ عید سے قبل ہے۔ صدقۃ الفطر میں لفظ الفطر اس بات کا متقاضی ہے ۔ اس سے پہلے اخراج محل نظر ہے۔ پہلا حق مقامی لوگوں کا ہے۔ بوقت ِ ضرورت دوسری جگہ نقل بھی جائز ہے۔ امام بخاری رحمۃ اللہ علیہ نے کتاب الزکوٰۃ میں اس طرح ’’باب‘‘ قائم کیا ہے: (بَابُ أَخْذِ الصَّدَقَۃِ مِنَ الأَغْنِیَائِ وَتُرَدُّ فِی الفُقَرَائِ حَیْثُ کَانُوا) [1] صدقہ فطر کے بعض مسائل امریکہ میں مسلمانوں کے بعض علاقوں میں، اور ملک کے بعض دوسرے حصوں میں بعض اوقات وہ خوردنی اشیاء دستیاب نہیں ہوتی جن کا ذکر شرعی نصوص میں کیا گیاہے۔ اسی طرح بعض اوقات بہت سے غریب مسکین مسلمانوں کو یہ [1] ۔ صحیح البخاری،بَابُ الِاعْتِکَافِ فِی العَشْرِ الأَوَاخِرِ، …الخ ،رقم:2026،صحیح مسلم،بَابُ اعْتِکَافِ الْعَشْرِ الْأَوَاخِرِ مِنْ رَمَضَانَ،رقم:1172،سنن ابی داؤد،بَابُ الِاعْتِکَافِ،رقم:2462 [2] ۔ صحیح البخاری،بَابُ إِذَا نَذَرَ فِی الجَاہِلِیَّۃِ أَنْ یَعْتَکِفَ ثُمَّ أَسْلَمَ،رقم:2043 [3] ۔ فقہ السنۃ،ج:1،ص:477 [4] ۔ استحاضہ۔ حیض سے مختلف چیز ہے حیض ایامِ ماہواری کے خون کو کہا جاتا ہے، ان ایام میں عورت کو نماز معاف ہے۔ روزے بھی نہیں رکھ سکتی۔ تاہم روزوں کی بعد میں ادائیگی ضروری ہے۔ استحاضہ میں بھی عورت کوخون آتا ہے لیکن یہ ایک بیماری ہوتی ہے، جس کی وجہ سے ایسا ہوتا ہے۔ اس میں عورت کے لیے نماز پڑھنا بھی ضروری ہے اور روزہ رکھنا بھی ۔ جیسا کہ حصرت مفتی صاحب حفظہ اللہ نے فرمایا ہے۔ (ص۔ع)