کتاب: دعا کے مسائل - صفحہ 86
ہے۔ عَنْ عَبْدِ اللّٰہِ بْنِ عَمْرِو بْنِ الْعَاصِ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہُمَا اَنَّہٗ سَمِعَ النَّبِیَّ صلی اللّٰه علیہ وسلم یَقُوْلُ :((اِذَا سَمِعْتُمُ الْمُؤَذِّنَ فَقُوْلُوْا مِثْلَ مَا یَقُوْلُ، ثُمَّ صَلُّوْا عَلَیَّ فَاِنَّہٗ مَنْ صَلّٰی عَلَیَّ صَلاَۃً صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ بِہَا عَشْرًا ثُمَّ سَلُوْا اللّٰہَ لِیَ الْوَسِیْلَۃَ فَاِنَّہَا مَنْزِلَۃٌ فِی الْجَنَّۃِ لَاَتَنْبَغِیْ اِلاَّ لِعَبْدٍ مِنْ عِبَادِ اللّٰہِ وَاَرْجُوْ اَنْ اَکُوْنَ اَنَا ہُوَ فَمَنْ سَأَلَ لِیَ الْوَسِیْلَۃَ حَلَّتْ عَلَیْہِ الشَّفَاعَۃُ))رَوَاہُ مُسْلِمٌ[1] حضرت عبداللہ بن عمرو بن العاص رضی اللہ عنہ کہتے ہیں میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا ہے ’’جب مؤذن کی اذان سنو تو وہی کچھ کہو جو مؤذن کہتا ہے پھر مجھ پر درود پڑھو کیونکہ مجھ پر درود پڑھنے والے پر اللہ دس رحمتیں نازل فرماتا ہے اس کے بعد میرے لئے اللہ تعالیٰ سے وسیلہ مانگو، وسیلہ جنت میں ایک مقام ہے جو جنتیوں میں سے کسی ایک کو دیا جائے گا مجھے امید ہے وہ جنتی میں ہی ہوں گا۔لہٰذا جو آدمی میرے لئے وسیلہ کی دعا کرے گا اس کے لئے میری شفاعت واجب ہو جائے گی۔‘‘ اسے مسلم نے روایت کیا ہے۔ مسئلہ نمبر 122 تکبیر تحریمہ کے بعد کی دعا درج ذیل ہے۔ عَنْ اَبِیْ ہُرَیْرَۃَ رضی اللّٰه عنہ قَالَ : کَانَ رَسُوْلُ اللّٰه صلي اللّٰه عليه وسلم اِذَاکَبَّرَ فِی الصَّلاَۃِ سَکَتَ بَیْنَ التکبیروَ الْقِرَأَ ۃِ فَقُلْتُ : یَا رَسُوْلَ اللّٰہِ صلی اللّٰه علیہ وسلم ! بِاَبِیْ اَنْتَ وَ اُمِّیْ أَ رَأَیْتُ سَکُوْتَکَ بَیْنَ التَّکْبِیْرِ وَالْقِرَأَۃِ اَخْبِرْنِیْ مَا تَقُوْلُ، قَالَ ] اَقُوْلُ اَللّٰہُمَّ بَاعِدْ بَیْنِیْ وَ بَیْنَ خَطَایَایَ کَمَا بَاعَدْتَّ بَیْنَ الْمَشْرِقِ وَ الْمَغْرِبِ اَللّٰہُمَّ نَقِّنِیْ مِنْ خَطَایَایَ کَمَا یُنَقَّی الثَّوْبُ الْاَبْیَضُ مِنَ الدَّنَسِ اَللّٰہُمَّ اغْسِلْنِیْ مِنَ الْخَطَایَایَ بِالثَّلْجِ وَالْمَائِ وَ الْبَرَدِ [ رَوَاہُ اَحْمَدُ وَالْبُخَارِیُّ وَ مُسْلِمٌ وَ اَبُوْدَاؤٗدَ وَالنِّسَائِیُّ وَابْنُ مَاجَۃَ[2] حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم تکبیر تحریمہ کے بعد قرأت شروع کرنے سے پہلے تھوڑی دیر خاموش رہتے۔ میں نے عرض کیا’’یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میرے ماں باپ آپ پر قربان اس خاموشی میں آپ کیا پڑھتے ہیں؟‘‘آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’میں یہ دعا پڑھتا ہوں’’((اے اللہ! [1] مختصر صحیح مسلم ، للالبانی ، رقم الحدیث 198 [2] صحیح سنن ابی داؤد ، للالبانی ، الجزء الاول ، رقم الحدیث 703