کتاب: دعا کے مسائل - صفحہ 128
حَیُّ یَا قَیُّوْمُ بِرَحْمَتِکَ اَسْتَغِیْثُ))رَوَاہُ التِّرْمِذِیُّ وَالْحَاکِمُ [1] (حسن) حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ جب نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو کوئی پریشانی لاحق ہوتی تو فرماتے((اے زندہ اور تھامنے والے(کائنات کے)میں تیری رحمت کے وسیلے سے تجھ سے فریاد کرتا ہوں۔))اسے ترمذی اور حاکم نے روایت کیا ہے۔ 4 عَنْ عَبْدِ اللّٰہِ بْنِ مَسْعُوْدٍ رضی اللّٰه عنہ قَالَ : قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ((مَا اَصَابَ اَحَدًا قَطُّ ہَمٌّ وَ لاَ حَزَنٌ فَقَالَ ] اَللّٰہُمَّ اِنِّیْ عَبْدُکَ وَابْنُ عَبْدِکَ وَابْنُ اَمَتِکَ نَاصِیَتِیْ بِیَدِکَ قَاضٍ فِیْ حُکْمُکَ عَدْلٌ فِیَّ قَضَائُ کَ اَسْئَلُکَ بِکُلِّ اِسْمٍ ہُوَ لَکَ سَمَّیْتَ بِہٖ نَفْسَکَ اَوْ اَنْزَلْتَہٗ فِیْ کِتَابِکَ اَوْ عَلَّمْتَہٗ اَحَدًا مِنْ خَلْقِکَ اَوْ اِسْتَأْثَرْتَ بِہٖٖ فِیْ عِلْمِ الْغَیْبِ عِندَکَ اَنْ تَجْعَلَ الْقُرْآنَ رَبِیْعَ قَلْبِیْ وَ نُوْرَ صَدْرِیْ وَ جِلاَئَ حُزْنِیْ وَ ذَہَابَ ہَمِّیْ وَ غَمِّیْ [ اِلاَّ اَذْہَبَ اللّٰہُ ہَمَّہٗ وَ حُزْنَہٗ وَ اَبْدَلَہٗ مَکَانَہٗ فَرْجًا))قَالَ : فَقِیْلَ یَا رَسُوْلَ اللّٰہِ صلی اللّٰه علیہ وسلم اِلاَّ نَتَعَلَّمُہَا، فَقَالَ((بَلٰی یَنْبَغِیْ لِمَنْ سَمِعَہَا اَنْ یَتَعَلَمَّہَا))رَوَاہُ اَحْمَدُ[2] حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کہتے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا’’ جب کسی شخص کو دکھ اور غم پہنچے تو مندرجہ ذیل دعا پڑھے۔((یااللہ! میں تیرا بندہ ہوں تیرے بندے اور بندی کا بیٹا ‘ میری پیشانی تیرے ہاتھ میں ہے‘تیرا ہر حکم مجھ پر نافذ ہونے والا ہے میرے بارے میں تیرا ہر فیصلہ انصاف پر مبنی ہے میں تجھ سے تیرے ہر اس نام کے وسیلے سے سوال کرتا ہوں جسے تونے خود اپنے لئے پسند کیا ہے یا اپنی کتاب میں نازل کیا ہے یا اپنی مخلوق میں سے کسی کو سکھایا ہے یا اپنے علم غیب کے خزانے میں محفوظ کر رکھا ہے کہ قرآن کو میرے دل کی بہار‘ سینے کا نور اور میرے دکھوں اور غموں کو دور کرنے کا ذریعہ بنا دے۔))تو اللہ تعالیٰ اس کا دکھ اور غم دور کر دیتے ہیں اور اس کی جگہ مسرت اور خوشی عنایت کرتے ہیں۔عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ کہتے ہیں کہ صحابہ کرام رضی اللہ عنہم نے عرض کیا’’یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم ! ہم یہ دعا یاد نہ کر لیں؟‘‘ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا’’کیوں نہیں ہر سننے والے کو چاہئے کہ یہ دعا یاد کرلے۔‘‘اسے احمد نے روایت کیا ہے۔ 5 عَنْ اَسْمَائَ بِنْتِ عُمَیْسٍ رَضِیَ اللّٰہُ عَنْہَا قَالَتْ : عَلَّمَنِیْ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلي اللّٰه عليه وسلم [1] صحیح سنن الترمذی ، للالبانی ، الجزء الثالث ، رقم الحدیث 2796 [2] عدۃ الحصن و الحصین ، رقم الحدیث 323