کتاب: دعا کے آداب و شرائط کتاب وسنت کی روشنی میں - صفحہ 259
ہیں ،’’دندنۃ‘‘ کہتے ہیں کہ آدمی کوئی بات کہے جس کی گنگناہٹ تو سنائی دے لیکن سمجھ میں نہ آئے)تو نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’حولھا ندندن‘‘،یعنی ہم بھی اسی کے قریب قریب گنگناتے ہیں ۔[1] (یعنی ہم بھی تمہاری ہی طرح اللہ سے جنت کا سوال کرتے ہیں اور جہنم سے اس کی پناہ مانگتے ہیں)۔ حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ،وہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’من سأل اللّٰہ الجنۃ ثلاث مراتٍ قالت الجنۃ: اللھم أدخلہ الجنۃ،ومن استجار من النار ثلاث مراتٍ قالت النار: اللھم أجرہ من النار‘‘[2] جو شخص تین بار اللہ سے جنت مانگتا ہے ،تو جنت کہتی ہے: اے اللہ اسے [1] ابوداؤد،حدیث نمبر:(۷۹۲،۷۹۳)بروایت جابرو بعض دیگر صحابۂ کرام رضی اللہ عنہم ،وابن ماجہ بروایت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ،حدیث نمبر:(۹۱۰)اور شیخ البانی رحمہ اللہ نے اسے صحیح ابوداؤد(۱/۱۵۰)اور صحیح ابن ماجہ(۱/۱۵۰)میں صحیح قرار دیا ہے۔ [2] ترمذي ۴/۷۰۰،وابن ماجہ ۲/۱۴۵۳،وغیرہما،اور شیخ البانی رحمہ اللہ نے اسے صحیح الترمذي(۲/۳۱۹)اور صحیح النسائی(۳/۱۱۲۱)میں صحیح قرار دیا ہے۔