کتاب: دعا کے آداب و شرائط کتاب وسنت کی روشنی میں - صفحہ 254
جو برا عمل کرے ،یا اپنے آپ پر ظلم کرے،پھر اللہ سے بخشش مانگے،تو وہ اللہ کو بخشنے والا مہربان پائے گا۔ نیز ارشاد ہے: ﴿وَإِنِّيْ لَغَفَّاْرٌ لِّمَنْ تَاْبَ وَآمَنَ وَعَمِلَ صَاْلِحاً ثُمَّ اھْتَدَیٰ﴾[1] اور بے شک میں اسے بخشنے والا ہوں جو توبہ کرے،اور ایمان لائے اور عمل صالح کرے،پھر راہ راست پر آجائے۔ حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے ،وہ بیان کرتے ہیں کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا: ’’قال اللّٰہ تعالیٰ: یا ابن آدم إنک ما دعوتني ورجوتني غفرت لک علی ما کان فیک ولا أبالي،یا ابن آدم لو بلغت ذنوبک عنان السماء ثم استغفرتني غفرت لک ولا أبالي،یا ابن آدم لو أتیتني بقراب الأرض خطایا ثم [1] سورۃ طٰہ: ۸۲۔