کتاب: دعوت دین کے بنیادی اصول - صفحہ 594
تکلیف پہنچ گئی تو وہ اپنے سوا کسی کو ملامت نہ کرے۔‘‘ 24… بلاوجہ اکیلے نہ سوئیں سیدنا ابن عمر رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں کہ: أَنَّ النَّبِیَّ صلي اللّٰه عليه وسلم نَہٰی عَنِ الْوَحْدَۃِ أَنْ یَبِیتَ الرَّجُلُ وَحْدَہٗ أَوْ یُسَافِرَ وَحْدَہٗ۔[1] ’’نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے اکیلے (سونے) سے منع فرمایا کہ آدمی تنہا رات بسر کرے یا تنہا سفر کرے۔‘‘ 25… محرم کے ساتھ ہی رات گزاری جائے سیدنا جابر رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ((أَلَا لَا یَبِیتَنَّ رَجُلٌ عِنْدَ امْرَأَۃٍ ثَیِّبٍ، إِلَّا أَنْ یَکُونَ نَاکِحًا أَوْ ذَا مَحْرَمٍ)) [2] ’’خبردار! کوئی آدمی کسی بیاہی عورت کے پاس بالکل رات نہ گزارے، سوائے اس صورت کے کہ اس کا (اس سے) نکاح ہوا ہو یا وہ محرم ہو۔‘‘ 26… ٹانگ پر ٹانگ رکھ کر نہ سوئیں سیدنا جابر بن عبداللہ رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ((لَا تَمْشِ فِی نَعْلٍ وَاحِدٍ، وَلَا تَحْتَبِ فِی إِزَارٍ وَاحِدٍ، وَلَا تَأْکُلْ بِشِمَالِکَ، وَلَا تَشْتَمِلِ الصَّمَّائَ، وَلَا تَضَعْ إِحْدٰی رِجْلَیْکَ عَلَی الْأُخْرٰی إِذَا اسْتَلْقَیْتَ)) [3] ’’تم ایک جوتا پہن کر نہ چلو، ایک چادر (ہو تو اس) کو گھٹنے کھڑے کر کے ان کے [1] مسند أحمد: ۵۶۵۰۔ صحیح الجامع:۲۹۱۹۔ سلسلۃ الأحادیث الصحیحۃ: ۶۰. [2] صحیح مسلم: ۲۱۷۱. [3] صحیح مسلم: ۲۰۹۹.