کتاب: دعوت دین کے بنیادی اصول - صفحہ 452
9. مومن؛ مومن کا آئینہ اورخیر خواہ ہوتاہے : سیدنا ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ((اَلْمُؤْمِنُ مِرْآۃُ الْمُؤْمِنِ، وَالْمُؤْمِنُ أَخُو الْمُؤْمِنِ، یَکُفُّ عَنْہُ ضَیعَتَہٗ وَیَحُوْطُہُ مِنْ وَرَائِہٖ))[1] ’’مومن؛ مومن کا آئینہ ہوتا ہے اور مومن مومن کا بھائی ہوتا ہے، اس کے مال کا اس کے حق میں دفاع کرتاہے اور اس کی عدم موجودگی میں اس کی حفاظت کرتا ہے۔‘‘ 10. مومن ہر حال میں شکرگزار ہوتاہے : سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ((اَلْمُؤْمِنُ بِخَیْرٍ عَلٰی کُلِّ حَالٍ تُنْزَعُ نَفْسُہٗ مِنْ بَیْنِ جَنْبَیْہِ وَہُوَ یَحْمَدُ اللّٰہَ عَزَّ وَجَلَّ)) [2] ’’مومن کسی بھی حالت میں بھلائی سے خالی نہیں ہوتا۔ اس کی جان اس کے دونوں پہلوؤں سے نکالی جا رہی ہوتی ہے اور وہ اللہ کی تعریف کر رہا ہوتا ہے۔‘‘ جنت؛ صرف مومنین کے لیے ہے سیدنا عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ: لَمَّا کَانَ یَوْمُ خَیْبَرَ أَقْبَلَ نَفَرٌ مِنْ صَحَابَۃِ النَّبِیِّ صلي اللّٰه عليه وسلم فَقَالُوْا فَلَانٌ شَہِیْدٌ فَلَانٌ شَہِیْدٌ، حَتّٰی مَرُّوْا عَلٰی رَجُلٍ فَقَالُوا فَلَانٌ شَہِیْدٌ، فَقَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلي اللّٰه عليه وسلم ((کَلَّا إِنِّیْ رَأَیْتُہٗ فِی النَّارِ فِیْ بُرْدَۃٍ غَلَّہَا أَوْ عِبَائَ ۃِ)) ثُمَّ قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صلي اللّٰه عليه وسلم : ((یَا بْنَ الْخَطَّابِ اذْہَبْ فَنَادِ [1] صحیح الجامع: ۶۶۵۵، ۶۶۵۶۔ سلسلۃ الأحادیث الصحیحۃ: ۹۲۶. [2] صحیح الجامع: ۶۶۵۲۔ سلسلۃ الأحادیث الصحیحۃ: ۱۶۳۲.